کرونا وائرس

ایران میں کووڈ-19 کی اومیکرون قسم کے پہلے کیس کی تشخیص کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے کروناوائرس کی نئی قسم اومیکرون سے متاثرہ پہلے کیس کی تشخیص کا اعلان کیا ہے۔

سائنسدانوں نے ایران کے اس اعلان سے صرف ایک ماہ قبل اومیکرون کی شناخت کی تصدیق کی تھی۔عالمی ادارہ صحت نے ایک روز قبل ہی خبردارکیا ہے کہ اومیکرون کروناوائرس کی ڈیلٹاشکل سے بھی زیادہ تیزی سے پھیل رہا ہے۔

ایران میں اب تک قریباً ساڑھے آٹھ کروڑ نفوس پر مشتمل کل آبادی میں سے قریباً 60 فی صد کوکرونا وائرس ویکسین کی دونوں خوراکیں لگائی جاچکی ہیں۔

واضح رہے کہ کووِڈ-19 سے ایران میں ایک لاکھ 31 ہزار سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں جو مشرقِ اوسط میں ہلاکتوں کی بدترین شرح ہے۔24 اگست کو709 افراد اس بیماری کی وجہ سے ہلاک ہوئے تھے۔طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ ویکسی نیشن کی وجہ سے حالیہ مہینوں میں اموات کی تعداد میں کمی آئی ہے۔

ایران نے حالیہ ہفتوں میں ویکسین لگانے کی مہم میں تیزی لائی ہے اورپانچ کروڑ سے زیادہ ایرانیوں کودوسری خوراک لگائی جاچکی ہےاور 35 لاکھ کو تیسری تقویتی خوراک لگائی گئی ہے۔

اگست کے آخرمیں جب صدر ابراہیم رئیسی نے اپنی انتظامیہ تشکیل دی تھی توصرف 70 لاکھ ایرانیوں کوویکسین کے دونوں ٹیکے لگائے گئے تھے۔

ایران میں عام طور پرچینی ساختہ سائنوفام ویکسین لگائی جارہی ہے۔اس کے علاوہ روسی ساختہ اسپوتنک-5 اور برطانوی سویڈش دوا سازکمپنی آسٹرازینکا کی تیارکردہ ویکسین بھی استعمال کی جارہی ہے۔ایرانی حکام نے ویکسین کی دوخوراکیں لگوانے والے افراد پر زوردیا ہے کہ وہ جلد سے جلد اپنی تیسری خوراک بھی لگوالیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں