حوثیوں کے لیےایران کے ایلچی کووڈ-19 کے علاج کی غرض سے یمن سے وطن روانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں حوثی ملیشیا کے لیے ایران کے خصوصی ایلچی حسن ایرلو کووڈ-19 کے مثبت ٹیسٹ کے بعد علاج کی غرض سے وطن واپس روانہ ہوگئے ہیں۔

ایران کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ایرناکے مطابق وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ نے بتایا کہ ایران نے حال ہی میں ’’کچھ علاقائی ممالک‘‘سے رابطہ کیا تھا تاکہ ایرلوکی علاج کی غرض سے وطن منتقلی میں مدد مل سکے۔

انھوں نے کہا کہ ایرلو گذشتہ کچھ دنوں سے کرونا وائرس سے متاثرہیں اوران کی ایران واپسی جاری ہے۔خطیب زادہ نے ذرائع ابلاغ کی ان خبروں کی تردید کی ہے کہ حوثیوں کے ساتھ تنازع کی وجہ سے ایرلو یمن سے لوٹ رہے ہیں۔

امریکی اخباروال اسٹریٹ جرنل نے علاقائی اور مغربی حکام کے حوالے سے جمعہ کوخبر دی تھی کہ حوثیوں نے ایرلو کو ایران واپس بھیجنے کی کوشش کی ہے۔اخبار نے ایک علاقائی عہدہ دار کے حوالے سے لکھاکہ ایرلو ان کے لیے بوجھ بن گئے ہیں اور وہ ایک سیاسی مسئلہ ہیں۔

واضح رہے کہ ایران نے اکتوبر 2020ء میں ایرلو کو حوثی ملیشیا کے لیے اپنا ایلچی مقررکیا تھا۔دسمبر 2020 میں امریکا نے ایرلو پر دہشت گردی کی سرگرمیوں کی معاونت کے الزام میں پابندیاں عاید کردی تھیں۔ امریکا کے محکمہ خارجہ نے انھیں ایران کی القدس فورس کا عہدہ دار قراردیا تھا۔ یہ فورس ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب (پاسداران انقلاب) کا سمندر پار بازو ہے۔

ایران حوثیوں کی کھلم کھلا حمایت کرنے والا دنیا کا واحد ملک ہے۔امریکا کے خصوصی ایلچی برائے یمن ٹم لنڈرکنگ نے اپریل میں کہا تھا کہ حوثی ملیشیا کے لیے تہران کی حمایت اہمیت کی حامل ہے اور یہ مہلک ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں