مقررہ وقت پر انتخابات کا اجرا ممکن نہیں ہے: لیبیائی پارلیمنٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا کی پارلیمنٹ میں صدارتی اور پارلیمانی انتخابات کی نگراں کمیٹی نے ایک بیان میں پارلیمنٹ کے اسپیکر عقیلہ صالح پر زور دیا ہے کہ وہ اپنے منصب پر دوبارہ کام شروع کر دیں۔ واضح رہے کہ صالح صدارتی انتخابات میں نامزد امیدوار بھی ہیں۔

عقیلہ صالح
عقیلہ صالح
Advertisement

کمیٹی نے اپنے بیان میں باور کرایا ہے کہ رواں ماہ کی چوبیس تاریخ کو مقررہ انتخابات کرانا ممکن نہیں ہے۔ مزید یہ کہ سیاسی عمل کو دوبارہ سے درست سمت پر لانے اور انتخابی قوانین پر عمل درامد کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور کرنے کے لیے پارلیمنٹ کے اسپیکر کے لیے ضروری ہے کہ وہ پھر سے اپنی ذمے داریاں سنبھال لیں۔

دوسری جانب لیبیا کے لیے اقوام متحدہ کی خصوصی ایلچی اسٹیفنی ولیمز کا کہنا ہے کہ انہوں نے لیبیائی سیاسی مکالمہ فورم کے ارکان کے ایک گروپ سے ملاقات کی ہے۔ ملاقات میں انتخابی عمل اور فورم کے نقشہ راہ پر عمل درامد کے حوالے سے دو ٹوک گفتگو ہوئی۔

لیبیا میں اقوام متحدہ کے مشن نے دارالحکومت لیبیا میں پرتشدد کارروائیوں پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ مشن نے لیبیا میں تمام سرگرم فریقوں پر زور دیا ہے کہ وہ اس مرحلے پر تحمل مزاجی کا مظاہرہ کریں۔

لیبیا میں انتخابات کی تیاریاں بعض امیدواران کی اہلیت کے حوالے سے قانونی تنازعات کے سبب مشکلات کا شکار ہیں۔ ان میں سیف الاسلام قذافی ، خلیفہ حفتر اور عبدالحمید الدبیبہ شامل ہیں۔ اسی طرح مسلح ملیشیاؤں کی جانب سے انتخابات روکنے کی دھمکی کے بعد ماحول کشیدہ ہو گیا ہے۔

یاد رہے کہ لیبیا میں موجودہ ایگزیکٹو حکام نے رواں سال مارچ کے وسط میں اپنی ذمے داری سنبھالی تھی۔ اس کا مقصد ایک عشرے سے جاری انارکی کے بعد سہولت کے ساتھ اقتدار کی منتقلی کا مشن مکمل کرنا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں