کرونا ویکسین پرمودی کی تصویر پرشکایت کرنے والے بھارتی کو سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بھارت کی ایک عدالت نے ایک ہندوستانی شہری کو وزیر اعظم نریندر مودی کی ملک کی کوویڈ ویکسینیشن مہم کی ہدایت کے طور پر خود کو فروغ دینے کے بارے میں شکایت کرنے مہنگی پڑ گئی۔ بھارتی شہری کی عدالت میں دائر شکایت پر جج نے اسے الٹا 1,300 ڈالر کے مساوی رقم کا جرمانہ کیا ہے۔ عدالت کا کہنا ہے کہ ایک غیراہم معاملے پر درخواست گذار نے عدالت کا وقوت ضایع کیا ہے۔

ہندو قوم پرست رہ نما COVID-19 کی وجہ سے تقریباً 500,000 ہندوستانیوں کی موت کے باوجود وبائی مرض سے لڑنے میں اپنی حکومت کی کامیابیوں کو فروغ دینے والی ایک بڑے اشتہاری مہم کا مرکز رہے ہیں۔

مودی کی تصویر کو بل بورڈز اور یہاں تک کہ مسافر طیاروں پر بھی ایک پیغام کے ساتھ تیار کیا گیا ہے جس میں ہندوستان کی آبادی کو دی جانے والی ایک ارب ویکسینیشن کی دہلیز تک پہنچنے کی تعریف کی گئی ہے۔

یہ مہم وبا کے شروع ہونے کے بعد سے مودی حکومت پر کی جانے والی سخت تنقید سے متصادم ہے۔ مخالفین نے کوویڈ متاثرین کے لیے موت کے سرٹیفکیٹ پر وزیر اعظم کے چہرے کو پرنٹ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

بھارت کی جنوبی ریاست کیرالہ سے تعلق رکھنے والے پیٹر میالی پارامبیل نے مودی کے چہرے کو ان کے ویکسین سرٹیفکیٹ پر پرنٹ کیے جانے پر اعتراض کیا اور ساتھ ہی عوام سے کرونا وائرس کے خلاف احتیاطی تدابیر پر عمل کرنے کی اپیل کی۔

انہوں نے ایک عدالت کو بتایا کہ ہندوستان میں ویکسینیشن مہم مودی کے حق میں "میڈیا مہم" میں بدل گئی ہے۔

اپنی درخواست میں اس نے کہا کہ اس نے اپنی ویکسین کی قیمت خود ادا کی ہے اور ان کے ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ پر مودی کی تصویر کا کوئی فائدہ نہیں۔

لیکن کیرالہ ہائی کورٹ نے یہ کہتے ہوئے اس کیس کو خارج کر دیا کہ یہ سیاسی محرک کا نتیجہ معلوم ہوتا ہے۔اس کیس کی وجہ سے عدالت کا قیمتی وقت ضائع ہوا جس پر درخواست گذار کو ایک لاکھ بھارتی روپے جرمانہ کیا گیا ہے۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اگر درخواست گزار اپنے وزیر اعظم کی تصویر دیکھ کر شرمندہ ہو تو وہ ویکسینیشن سرٹیفکیٹ کےسے نظریں ہٹا سکتا ہے۔

میالی پارامبیل کے وکیل نے اے ایف پی کو بتایا کہ ان کا مؤکل اس فیصلے کے خلاف اپیل کرے گا۔

ہندوستان میں کوویڈ سے 477,000 سے زیادہ تصدیق شدہ اموات ریکارڈ کی گئی ہیں جو امریکا اور برازیل کے علاوہ کسی بھی دوسرے ملک سے زیادہ ہیں۔

حکومت نے مودی کو چہرے کو میڈیا مہم کے طور پر استعمال کرنے کا جواز پیش کیا ہے۔ وزیر صحت نے اگست میں پارلیمنٹ کو بتایا تھا کہ اس مہم سے کرونا وائرس سے بچاؤ کے بارے میں بیداری پیدا ہوئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں