منڈیلا کے قید خانے کی چابی کی مقررہ نیلامی پر جنوبی افریقا کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جنوبی افریقا نے اُس جیل کے قید خانے کی چابی کی مقررہ نیلامی کی مذمت کی ہے جہاں اس کے سابق صدر اور قومی رہ نما نیلسن منڈیلا کو قید کیا گیا تھا۔ یہ جیل جزیرہ روبن میں واقع ہے۔

جزیرہ روبن کے اس قید خانے میں منڈیلا نے 27 برس گزارے تھے۔ اس قید خانے کی چابی اُس نیلامی کا مرکزی عنصر ہے جس کا انعقاد برطانیہ کا Guernsey's auction house آئندہ ماہ 28 جنوری کو کر رہا ہے۔

جنوبی افریقا کے کھیلوں، فنون اور ثقافت کے وزیر نیتھی متھیتھوا نے ایک بیان میں کہا کہ "یہ بات سمجھ سے باہر ہے کہ گیرنزیز آکشن ہاؤس ہماری ملک کی الم ناک تاریخ اور اس چابی کے علامت ہونے سے واقفیت کے باوجود جنوبی افریقا کی حکومت، جنوبی افریقا میں تاریخی ورثے سے متعلق حکام اور جزیرہ روبن کے میوزم کے ساتھ بنا کسی مشورے کے نیلامی میں چابی فروخت کرنے کا ارادہ رکھتا ہے"۔

میڈیا رپورٹوں کے مطابق منڈیلا کی جیل کا سابق پہرے دار کرسٹو برانڈ اس چابی کو فروخت کر رہا ہے۔

متھیتھوا نے مزید کہا کہ "یہ چابی جنوبی افریقا کے عوام کی ملکیت ہے۔ جزیرہ روبن کا میوزیم اور جنوبی افریقا کی ریاست اس چابی کی سرپرست ہے، یہ کسی ایک شخص کی ملکیت نہیں"۔ افریقی وزیر نے اس چابی کی نیلامی فوری طور پر روک دینے کا مطالبہ کیا۔

نیلسن منڈیلا دسمبر 2013ء میں 95 برس کی عمر میں فوت ہو گئے تھے۔ وہ اپنے ملک میں نسل پرستی پر مبنی نظام کے مخالف سرگرم کارکن تھے۔

انہیں مئی 1994ء میں جمہوری جنوبی افریقا کا پہلا صدر منتخب کیا گیا تھا۔ وہ جون 1999ء تک اس منصب پر فائز رہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں