یمن اور حوثی

عرب اتحاد کا حزب اللہ پر صنعا ایئرپورٹ کو حملوں کے لیے استعمال کرنےکا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں آئینی حکومت کے دفاع کے لیے سرگرم عرب فوجی اتحاد نے کہا ہے کہ وہ آج اتوار کو صنعا کے ہوائی اڈے کو بیلسٹک میزائلوں اور ڈرونز کی لانچنگ کے مرکز میں تبدیل کرنے کے ثبوت پیش کرے گا۔

عرب اتحاد نے یمن میں حزب اللہ کی دہشت گردی میں ملوث ہونے کے ثبوت کے ساتھ ساتھ لبنانی ملیشیا کی جانب سے سعودی عرب کو نشانہ بنانے کے لیے صنعا کے ہوائی اڈے کے استعمال کے شواہد بھی پیش کرنے کا وعدہ کیا۔

اتحاد نے کہا کہ وہ کل سعودی وقت کے مطابق شام 4 بجے اتحاد کے سرکاری ترجمان کو یمنی بحران پر ایک جامع بریفنگ کے دوران نئی تفصیلات بتائے گا۔

نجی ذرائع نے العربیہ کو انکشاف کیا کہ اتحاد کے شواہد میں بتایا جائے گا کہ ہم نے یہ معلومات حوثیوں کی لیڈنگ کمانڈ کے اندر گھس کر حاصل کی ہیں۔

عرب اتحاد کا کہنا ہے کہ مآرب اور الجوف میں حوثی ملیشیا کے خلاف گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 40 اہداف کو نشانہ بنایا جن میں 17 فوجی گاڑیوں کو تباہ کیا گیا۔ ان حملوں میں 223 سےزیادہ حوثی باغی ہلاک ہوئے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے ساحلی فورسز کی مدد اور شہریوں کی حفاظت کے لیے مغربی ساحل پر دو ٹارگٹنگ آپریشن کیے۔

جمعے کو عرب اتحاد نے تصدیق کی کہ اس نے دارالحکومت صنعا میں اسلحے کی منتقلی کو نگرانی کے بعد تباہ کر دیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آپریشن کا نفاذ خطرے اور فوجی ضرورت کے اصول کے جواب میں ہوا ہے جس میں عام شہریوں سے صنعاء میں ٹارگٹ سائٹ کے قریب جمع نہ ہونے کی اپیل کی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں