کرونا وائرس

متحدہ عرب امارات:6 ماہ کے بعد کووِڈ-19 کے 1800 سے زیادہ یومیہ کیسوں کی تشخیص

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات نے اتوار کوقریباً چھے ماہ کے بعد پہلی مرتبہ کروناوائرس کے سب سے زیادہ یومیہ کیسوں کی اطلاع دی ہے اور ملک میں گذشتہ 24 گھنٹے میں اس مہلک وائرس کے 1800 سے زیادہ کیسوں کی تشخیص ہوئی ہے۔

وزارتِ صحت نے آج یواے ای میں کووِڈ-19 کے1803 نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے۔پہلے سے اس وائرس کا شکار 618 مریض صحت یاب ہوگئے ہیں جبکہ دو مریض وفات پا گئے ہیں۔

وزارت صحت نے یہ واضح نہیں کیا کہ آیا نئے مریضوں میں اومیکرون کا بھی کوئی کیس ہے۔اس نے یکم دسمبرکو دنیا میں تیزی سے پھیلنے والی وائرس کی اس متعدی قسم کے پہلے کیس کی تشخیص کی اطلاع دی تھی۔

حالیہ مہینوں میں خلیجی ملک میں کروناوائرس کے یومیہ کیسوں میں نمایاں کمی واقع ہوئی تھی۔لیکن آخری مرتبہ جون کے آخر میں سب سے زیادہ یومیہ کیس ریکارڈ کیے گئے تھے۔تب 29 جون کو 2184 کیس رپورٹ ہوئے تھے۔

یواے ای میں کرونا وائرس کی روک تھام کے لیے احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل درآمد کیا جاتا رہا ہے اور وہ شہریوں اور مکینوں کو ویکسین لگانے کی شرح کے اعتبار سے بھی دنیا کے سرفہرست ممالک میں سے ایک ہے۔اس میں شامل امارتوں نے حالیہ مہینوں میں کاروباروں کو کھلا رکھا ہے مگراس کے باوجود کم تعداد میں یومیہ کیس رپورٹ ہوئے تھے اوراس وائرس سے اموات کی شرح بھی کم رہی ہے۔

یواے ای نے نومبر میں یہ اطلاع دی تھی کہ 100 فی صد آبادی کو کووڈ-19 ویکسین کی ایک خوراک لگائی جاچکی ہے اور 90.3 فی صد کو مکمل ویکسین لگائی گئی ہے۔خلیجی ملک نے تیزی سے پھیلنے والی نئی شکل اومیکرون سے متعلق بڑھتے ہوئے خدشات کے پیش نظر 18 سال سے زیادہ عمر کے ہر شخص کے لیے کووڈ-19 ویکسین کی اضافی تقویتی خوراک لگانے کی بھی منظوری دی ہے اور اس مقصد کے لیے ویکسین مقررہ مراکز پر دستیاب ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں