کرونا وائرس

کرونا اومیکرون کی کاری ضرب ، فضائی پروازیں منسوخ اور بحری جہاز موقوف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

کرونا وائرس کی سامنے آنے والی نئی قسم اومیکرون نے دنیا بھر میں کرسمس کی چھٹیوں بالخصوص مسافرین کے مقررہ پروگرام کو بھرپور طریقے سے متاثر کیا ہے۔ اس دوران ہزاروں فضائی پروازیں منسوخ کی جا چکی ہیں جب کہ جمعے اور اتوار کے بیچ ہزاروں پروازوں کے اوقات تاخیر کا شکار ہوئے ہیں۔ متعدد فضائی کمپنیوں نے اقرار کیا ہے کہ اومیکروں سے متاثرہ افراد کی تعداد میں اضافے کے نتیجے میں کارکنان کی کمی کا سامنا ہو رہا ہے۔

ورونا أوميكرون سفر 2 تعبيرية

دنیا کے مختلف ممالک میں کرونا اومیکرون کے کیسوں میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔ بعض ممالک نے پھر سے لاک ڈاؤن کی تدابیر اختیار کی ہیں اور کھیلوں کے مقابلے اور سماجی سرگرمیاں منسوخ کر دی گئی ہیں۔ ادھر امریکی حکومت سمیت عالمی ممالک کی حکومتیں کووڈ کے ٹیسٹ کی تعداد اور ویکسین کی مہموں کو بڑھانے کے لیے کوشاں ہیں۔

وائٹ ہاؤس میں کرونا کے انسداد کے سینئر مشیر اینٹنی واؤچی کا کہنا ہے کہ امریکا کو اس وقت کووڈ-19 کے ٹیسٹوں کی کمی کا سامنا ہے تاہم اس مسئلے کو عنقریب حل کر لیا جائے گا۔ نیویارک میں بچوں میں کرونا کے کیسوں میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔

امراض کے انسداد اور ان سے تحفظ سے معلق امریکی مراکز CDC کا کہنا ہے کہ 60 سے زیادہ سیاحتی بحری جہازوں کو زیر نگرانی رکھا گیا ہے۔ امریکی اخبار Washington Post کے مطابق ان میں سے کئی جہاز اپنی مقررہ منزلوں پر لنگر انداز نہیں ہو سکے۔ اس کی وجہ مذکورہ مقامات کے حکام کی جانب سے ان جہازوں کو اجازت نہ دینا ہے۔ اگرچہ ان جہازوں کے 95% مسافروں کو ویکسین لگ چکی ہے۔

واضح رہے کہ دسمبر 2019ء میں چین میں عالمی ادارہ صحت کے دفتر نے کرونا وائرس کے نمودار ہونے کے بارے میں آگاہ کیا تھا۔ اس کے بعد سے اب تک دنیا بھر میں کم از کم 5395400 افراد اس وبا کے سبب موت کا شکار ہو چکے ہیں۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق سب سے زیادہ اموات امریکا میں ہوئی ہیں۔ اس کے بعد بھارت کا دوسرا ، روس کا تیسرا اور میکسیکو کا چوتھا نمبر ہے۔

گذشتہ سات روز میں دنیا بھر میں کرونا سے ہونے والی اموات میں سب بڑا حصہ یعنی 53% اموات یورپ میں ہوئیں۔ دوسرے نمبر پر 22% کے ساتھ امریکا اور کینیڈا کا ریجن ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں