کرونا وائرس

ابوظبی:کووِڈ-19 کے کیسوں میں اضافےکے پیش نظر فاصلاتی تدریس کادوبارہ نفاذ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

متحدہ عرب امارات میں کروناوائرس کے یومیہ کیسوں میں اضافے کے پیش نظردارالحکومت ابوظبی میں احتیاطی تدابیر کے طور پرتعلیمی سال کی نئی مدت کے پہلے دو ہفتوں کے لیے فاصلاتی تدریس پر دوبارہ عمل درآمد کیا جائے گا۔

ابوظبی کے میڈیادفترنے منگل کو اعلان کیا کہ اس فیصلے کا اطلاق امارت کے تمام سرکاری اور نجی اسکولوں بشمول تربیتی اداروں، کالجوں اور یونیورسٹیوں پر ہوگا اور ان کی آن لائن کلاسیں ہوں گی۔

دریں اثناء ابوظبی کے حکام نے امارت میں داخل ہونے والوں کے لیے نئے سرحدی قواعدوضوابط کا اعلان کیا ہے۔

امارت کی ایمرجنسی، کرائسیس اور ڈیزاسٹرزکمیٹی کے مطابق ابوظبی میں آنے والے افراد کوالحوسن ایپ پر ویکسین لگوانے کا گرین پاس دکھانا ہوگا جبکہ جن لوگوں کو ویکسین نہیں لگی ہے،انھیں آمد کے وقت گذشتہ 96 گھنٹے میں لیا گیا منفی پی سی آر ٹیسٹ دکھانا ہوگا۔

نئے قواعد جمعرات سے نافذالعمل ہوں گے۔یہ قواعد موجودہ حفاظتی پروٹوکول کے علاوہ ہیں۔ان میں ای ڈی ای اسکینر بھی شامل ہے۔ان کا مقصد کووڈ-19 کے پھیلاؤ کوروکنا ہے۔

اس اسکینرٹیکنالوجی سے ممکنہ کووڈ-19 انفیکشن کے سکرین اور فوری نتائج فراہم ہوتے ہیں۔اسکینرایک فاصلے پرچلائے جاتے ہیں اور یہ عوامی مقامات کے داخلی راستوں یا دروازوں سمیت بڑے پیمانے پر اسکریننگ کے لیے مؤثر ہیں۔

قبل ازیں یواے ای کی وزارت صحت نے منگل کے روزکووِڈ-19 کے 1846 نئے کیسوں، 632 مریضوں کے صحت یاب ہونے اور ایک مریض کی موت کی تصدیق کی ہے۔

یواے ای نے نومبر میں یہ اطلاع دی تھی کہ 100 فی صد آبادی کوکووڈ-19 ویکسین کی ایک خوراک لگائی جاچکی ہے اور90.3 فی صد کو مکمل ویکسین لگائی گئی ہے۔خلیجی ملک نے تیزی سے پھیلنے والی نئی شکل اومیکرون سے متعلق بڑھتے ہوئے خدشات کے پیش نظر 18 سال سے زیادہ عمر کے ہر شخص کے لیے ویکسین کی اضافی تقویتی خوراک لگانے کی منظوری دی ہے اوراس مقصد کے لیے ویکسین مقررہ مراکز پر دستیاب ہے۔

یواے ای نے چینی ساختہ سینوفارم کی پروٹین پر مبنی کووِڈ-19 کی ویکسین کے ہنگامی استعمال کی بھی منظوری دے دی ہے اور یہ جنوری 2022 سے تقویتی خوراک کے طورپرعوام کے لیے دستیاب ہوگی۔

وزارت صحت نے پیر کو ایک بیان میں کہا کہ یہ ویکسین متحدہ عرب امارات کے گروپ 42 اور چین کے نیشنل بائیوٹیک گروپ (سی این بی جی) کے درمیان مشترکہ منصوبے کے تحت تیاراور تقسیم کی جائے گی۔ سی این بی جی چین کے قومی دواساز گروپ (سینوفارم) کا یونٹ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں