یمن اور حوثی

یمن : شبوہ میں اتحادی افواج کے حملوں میں حوثیوں کی عسکری گاڑیاں تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں آئینی حکومت کے حامی عرب اتحاد نے شبوہ صوبے میں بیحان کے محاذ پر 24 گھنٹوں کے دوران میں حوثی ملیشیا کی متعدد عسکری گاڑیاں تباہ کر دیں۔

زمینی عسکری ذرائع نے العربیہ اور الحدث نیوز چینل کے نمائندے کو آج بدھ کے روز بتایا کہ اتحادی حملوں میں تباہ کی جانے والی عسکری گاڑیاں بھاری ہتھیار اور گولہ بارود لے کر جا رہی تھیں۔

شبوہ میں عتق کے ہوائی اڈے کو نشانہ بنائے جانے کے حوالے سے یمنی فوج کے العمالقہ بریگیڈز کے ترجمان نے حوثیوں پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے ہوائی اڈے پر بم باری کی۔ البتہ احتیاطی تدابیر کی بدولت حملے میں بڑا نقصان نہیں ہوا۔

دوسری جانب عدن میں یمنی حکومت کے زیر انتظام شہری ہوا بازی کی اتھارٹی نے منگل کی شام عتق کے ہوائی اڈے پر بزدلانہ دہشت گرد حملے کی مذمت کی ہے۔ حملے میں ہوائی اڈے کے بعض تکنیکی لوازمات کو نقصان پہنچا۔

یاد رہے کہ دو روز سے مشترکہ افواج کی کمک شبوہ کے محاذوں پر پہنچ رہی ہے تا کہ حوثیوں کے زیر قبضہ اضلاع کو آزاد کرایا جا سکے۔ شبوہ صوبے کی حدود کے اطراف یمنی فوج اور حوثی ملیشیا کے درمیان گھمسان کی لڑائی ہوئی۔ اس کے نتیجے میں درجنوں حوثی جنگجو مارے گئے۔

حوثی ملیشیا نے رواں سال ستمبر سے البیضاء صوبے سے کیے جانے والے حملے تیز کر دیے ہیں۔ اس دوران میں وہ شبوہ صوبے میں عین، بیحان اور عسیلان کے اضلاع پر قبضہ کرنے میں کامیاب ہو گئی۔ اس طرح ایران نواز ملیشیا نے حریب کی سمت سے مارب صوبے کی جانب ایک نیا محاذ کھول لیا۔ تاہم مارب کے جنوب میں حوثیوں کو یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کی جانب سے شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں