راس الخیمہ میں 2022ء کے آغازپرآتش بازی شو کے دونئے ریکارڈ گنیزبُک میں شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
5 منٹس read

امارت راس الخیمہ میں نئے سال کے آغازپر بھرپور خوشی کے اظہار کے لیے آتش بازی کا شاندارمظاہرہ کیا گیا ہے اور اس نے گنیزبُک کے دو عالمی ریکارڈتوڑ دیے ہیں۔

اس کا ایک نیا عالمی ریکارڈ سب سے زیادہ فاصلے سے چلائے جانے والے(موسٹ ریموٹ آپریٹڈ) ملٹی روٹرز/ڈرونز سے بیک وقت آتش بازی سے بنا ہے اور دوسرا ریکارڈ’سب سے زیادہ اونچائی والے ملٹی روٹر/ڈرون کا فائر ورک ڈسپلے‘ کا تھا۔

4۰7 کلومیٹرپرمحیط اور خلیج عرب سے شاندارانداز میں اٹھتے ہوئے آتش گیرڈرون نے آتش بازی کا مظاہرہ کیا ہے۔ان کے علاوہ اس میں آتش بازی کے 15,000 اثرات، 130 سے زیادہ سمندری جگہوں اور آتش بازی کرنے والے سیکڑوں ڈرونز کابیڑا شامل تھا۔

آتش بازی کا یہ سلسلہ 12 منٹ تک جاری رہا تھا اور اس کو خصوصی طورپرتخلیق کیا گیا تھا تاکہ رزمیہ آرکیسٹرا موسیقی کے ذریعے چھے موضوعات کے ساتھ دوبارہ ملنے کی خوشی کی عکاسی کی جاسکے۔ روشنیوں اور موسیقی کے امتزاج نے زائرین کو خوب محفوظ کیا۔ان میں سے کئی لوگ ایک دن پہلے سے خاندان اور دوستوں کے ساتھ مخصوص مقامات پرنئے سال کا جشن دیکھنے کے لیے کیمپ لگا رہے تھے۔

یواے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق دنیا بھر سے آنے والے ہزراوں زائرین نے اس جشن میں شرکت کی ہے۔اس میں براہ راست کنسرٹ بھی شامل تھے اور آتش بازی کے مظاہرے سے قبل مختلف سرگرمیاں بھی اس جشن کا حصہ تھیں۔

نئے سال کا آغاز اثابتیت اور خوش امیدی کے بھرپورجذبے کے ساتھ کیا گیا۔آتش بازی کے اس شو میں متحدہ عرب امارات کوبھی خراج تحسین پیش کیا گیا کیونکہ وہ اپنے قیام کا 50 واں سال منارہاہے اور اس خطے کے معروف سیاحتی مقامات میں سے ایک کے طور پر راس الخیمہ کے بڑھتے ہوئے مقام کا مظہر تھا۔

منتظمہ کمیٹی کے ترجمان نے کہا کہ ’’نئے سال کا جشن راس الخیمہ اور متحدہ عرب امارات کی قیادت اور عوام کو نہ صرف اس وقت خراج تحسین پیش کرتا ہے جب ہم اپنی قوم کی 50ویں سالگرہ منارہے ہیں بلکہ اگلے 50 سال کی تیاری میں بھی مگن ہیں۔امید،اثباتیت، لچک اوراعتماد کا پیغام دیتے ہوئے نئے سال کے آغازپرہونے والے تیوہار کو محفوظ طریقے سے منانے کے لیے لوگوں کودوبارہ اکٹھا کیا گیا ہے۔اس تقریب کے ساتھ ہم نے ایک بار پھر راس الخیمہ کی شہرت کو سیاحت کی معروف منزل کے طور پر اجاگر کیا اور یہ امارت دنیا بھر سے آنے والوں کا خیرمقدم کرتی ہے‘‘۔

آتش بازی کا مظاہرہ چھے ایکٹ میں ترتیب میں دیا گیا تھا۔اس کا آغاز آدھی رات سے ذرا پہلے الٹی گنتی سے ہوا تھا۔اس میں حیرت کے ایک عارضی تھیٹر کا مرحلہ طے کیا گیا تھا۔ نئے سال کا آغاز دنیا کی کسی بھی عمارت سے بلند(1055.8 میٹ،ایک کلومیٹر سے زیادہ اونچے) ٹاور پربرقی قمقموں کو روشن کرکے کیا گیا۔اس کے بعد فائر ورک ڈرونز کے ساتھ آسمان پر لکھا:’ہیپی نیوایئر‘(نیاسال مبارک) کا پیغام آیا۔اس سلسلے نے میدان کو متعدد رنگوں میں روشن کردیا۔ ان دونوں سلسلوں نے راس الخیمہ سے دو نئے گنیز ورلڈ ریکارڈ منسوب کردیے ہیں۔

اس کا اگلا سلسلہ آرکیسٹرا موسیقی کا تھا۔اس کے ذریعے متحدہ عرب امارات کو خراج تحسین پیش کیا گیا اورملک اس کے عوام کی کامیابیوں کا جشن منایا گیا۔خوب صورتی سے ڈیزائن کی گئی آتش بازی اگلے عمل سے تب ہم آہنگ ہوئی جب سیکڑوں ڈرونز نے متحدہ عرب امارات کی پچاسویں سالگرہ کے لوگو کو شاندار ڈسپلے کے ساتھ دکھایا۔اس کے بعد ایک اورحیرت انگیز شو ہوا۔اس میں اگلے پچاس سال کے لیے متحدہ عرب امارات کے عزم کی وضاحت کی گئی ہے۔

ملٹی روٹر/ ڈرون سے آتش بازی کے ذریعے سب سے اونچا ٹاور بنایاگیا۔1,055.8 میٹر بلند آتش بازی کا یہ ٹاور دنیا کی کسی بھی فلک بوس عمارت سے اونچا تھا۔ جدید ترین ڈرون ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے خصوصی طور پر ڈیزائن کی گئی آتش بازی اس کی دل کشی میں اضافہ کررہی تھی۔یہ گنیز ورلڈ ریکارڈز کا پہلا ٹائٹل تھا۔

گنیزورلڈ ریکارڈز کا دوسرا ٹائٹل ’موسٹ ریموٹ آپریٹڈ ملٹی روٹرز/ڈرونزسے بیک وقت آتش بازی کاتھا۔452 ڈرونز نے آسمان پر 'ہیپی نیو ایئر' ویژیول بنانے کے لیے بیک وقت آتش بازی کا آغازکیا۔ اس کارنامے کے لیے منتظمین جدید آتش بازی اور مربوط وائرلیس ٹیکنالوجی کو بروئے کارلائے تھے۔اس سے امارت کے ساحل شاندار روشنیوں سے جگمگا اٹھے تھے۔واضح رہے کہ اس شو کی تیاری میں پانچ ہزار گھنٹے صرف ہوئے ہیں اور اس کو کامیاب بنانے میں سیکڑوں کارکنان نے حصہ لیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں