یمن اور حوثی

عرب اتحاد نے حوثی ملیشیا کے تین بمبار ڈرون طیارے تباہ کر دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یمن میں آئینی حکومت کی حمایت کرنے والے عرب اتحاد نے کہا ہے کہ اس نے صنعا میں حوثی ملیشیا کی طرف سے چھوڑے گئے تین بمبار ڈرون طیاروں کا پتا لگانے کے بعد کارروائی کرکے انہیں تباہ کردیا ہے۔

اتحادی افواج نے بتایا کہ اتحاد دارالحکومت صنعا کے اندر سے ڈرون کے خطرے کے ذرائع کی نگرانی کر رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ خطرے کے جواب میں ہم انٹیلی جنس نگرانی اور فضائی حملوں کے لیے آپریشنل تیاری کر رہے ہیں۔

ہفتے کے روزیمن میں آئینی حکومت کی حمایت کرنے والے اتحاد کے جنگی طیاروں نے شبوہ گورنری کے شمال مغرب میں واقع بیہان ڈاریکٹوریٹ میں حوثی ملیشیا کے ٹھکانوں اوراجتماعات پر بمباری کی۔

اتحادی فوج کی بمباری میں حوثی ملیشیا کے الحمیٰ سائٹ کو نشانہ بنایا گیا۔

یمنی اخبار "26 ستمبر" کی رپورٹ کےمطابق ہفتے کے روز مآرب کے محاذوں پر فوج اور اتحادی جنگجوؤں کی فائرنگ سے درجنوں حوثی ہلاک اور زخمی ہوئے۔

اخبار نے کہا کہ فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے صوبے کے جنوبی محاذوں پر حوثیوں کے ٹھکانوں پر کئی حملے کیےجن کے نتیجے میں ملیشیا کو کئی اہم مقامات پرپسپائی کا سامنا کرنا پڑا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہےکہ اتحادی فوج کے توپ خانے اور اتحادی جنگجوؤں نے مآرب کے اطراف میں الگ الگ مقامات پر حوثی ملیشیا کے اجتماعات اور کمک پر بمباری کی، جس سے اس کی صفوں کو تعداد اور سازوسامان میں نقصان پہنچا۔

شبوہ میں بیحان،عسیلان اور عین میں کرفیو نافذ

شبوہ گورنر میں سیکیورٹی کمیٹی کے سربراہ عوض العولقی کو ہدایت کی کہ وہ بیحان، عسیلان اور عین کے اضلاع میں ہنگامی اور کرفیو نافذ کریں۔

گورنر العولقی نے یمنی خبر رساں ایجنسی کو ایک بیان میں کہا کہ تینوں اضلاع کی زمینیں جنگی کارروائیوں اور لڑائیوں کا میدان بنی ہوئی ہیں تاکہ انہیں ملیشیا کی باقیات سے آزاد کرایا جا سکے۔

گورنر العولقی نے انجینئرنگ کی خصوصی ٹیموں کو بھی ہدایت کی کہ وہ عسیلان ڈاریکٹوریٹ میں جنگ کی باقیات اور حوثی ملیشیا کی بچھائی گئی بارودی سرنگوں سے نمٹنے کے لیےعلاقوں کی صفائی کریں۔

شبوہ کے گورنر نے شہریوں کو اپنی زندگیوں کے تحفظ کے لیے ہدایات پر عمل کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

اس سے قبل یمنی مسلح افواج کے میڈیا سینٹر نے ہفتے کے روز تصدیق کی تھی کہ حوثیوں کوبھاری جانی اور مالی نقصان سے دوچار کرنے کے بعد گورنری کے کئی علاقوں کا کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں