کویت کے تیل کے اعلیٰ منتظم ہیثم الغیص اوپیک کے سیکریٹری جنرل منتخب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

دنیا میں تیل پیداکرنے والے سرکردہ ممالک نے پیر کے روز کویتی تیل کے اعلیٰ منتظم ہیثم الغیص کو پیٹرولیم برآمد کنندگان ممالک کی تنظیم (اوپیک) کا نیاسیکریٹری جنرل منتخب کرلیا ہے۔

ہیثم الغیص 2017ء سے جون2021ء تک کویت کے اوپیک گورنر رہے تھے۔اس وقت وہ کویت پیٹرولیم کارپوریشن (کے پی سی) کے ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر کے طور پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔

اوپیک نے ایک بیان میں کہا ہے کہ تنظیم کے اجلاس میں کویت کے مسٹرہیثم الغیص کو تین سال کی مدت کے لیے سیکرٹری جنرل مقرر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔وہ یکم اگست 2022ء کواپنا عہدہ سنبھالیں گے۔

وہ کے پی سی سے قبل بیجنگ اور لندن میں اپنی فرم کے دفاتر کی سربراہی کرچکے تھے۔انھوں نے ریسرچ مینجمنٹ کے ڈائریکٹر کے طور پر خدمات انجام دی تھیں اور تیل کی صنعت میں ان کا 30 سال کا تجربہ ہے۔ الغیص نے اوپیک میں تیل کی پیداوار کی نگرانی کی ذمہ دار مشترکہ تکنیکی کمیٹی کی صدارت بھی کی اور2020ء میں انٹرنل آڈٹ کمیٹی کے چیئرمین رہے تھے۔

سعودی وزیرتوانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان نے تنظیم کے نئے سیکرٹری جنرل کی حیثیت سے ہیثم الغیص کے انتخاب کاخیرمقدم کیا ہے اور انھیں مبارک بادپیش کی ہے۔

وہ نائجیریا سے تعلق رکھنے والے موجودہ سیکریٹری جنرل محمد بارکیندو کی جگہ عہدہ سنبھالیں گے۔انھوں نے 2016 میں تنظیم کی سربراہی سنبھالی تھی اورتین، تین سال کی دو مدت کے لیے تنظیم کے سربراہ رہے ہیں۔ان کی موجودہ مدت جولائی میں ختم ہوگی۔

بارکیندوکے دور ہی میں اوپیک نے2020ء میں تیل کی یومیہ پیداوارمیں زبردست کمی کی تھی کیونکہ کرونا وائرس کی وَبا سے عالمی منڈیاں بری طرح متاثر ہوئی تھی اور تیل کی کھپت کم ہوکررہ گئی تھی۔گذشتہ سال سے تنظیم کے ممالک بتدریج یومیہ پیداوار میں اضافہ کررہے ہیں اور قیمتوں میں بھی بہتری آئی ہے۔

ویانا میں قائم اس تنظیم میں سعودی عرب کی قیادت میں 13 رکن ممالک شامل ہیں جوروس سمیت اپنے 10دیگر اتحادی ممالک کے ساتھ مل کر عالمی مارکیٹوں میں قیمتوں پرقابو پانے کے لیے تیل کی یومیہ پیداوار طے کرتے ہیں۔اوپیک اور روس کی قیادت میں ممالک پرمشتمل گروپ اوپیک پلس کہلاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں