ایران:کرج کے نزدیک سنائی دینے والی زوردارآوازکس کی تھی؟پاسداران انقلاب کی وضاحت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب نے دارالحکومت تہران کے مغرب میں واقع قصبہ کرج کے قریب سنائی دینے والی دھماکے کی زوردارآواز وضاحت کی ہے اور کہا ہے کہ یہ ایک تربیتی مشق کے دوران میں داغے گئے راکٹ کے پھٹنے سے پیدا ہوئی تھی۔

پاسداران انقلاب کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ بدھ کی سہ پہر کرج کے مضافاتی علاقوں میں زوردار آوازسنائی دی تھی۔ یہ ایک تربیتی مشق کے دوران میں راکٹ کی فائرنگ کی وجہ سے پیدا ہوئی تھی۔ پاسداران انقلاب کے ایک ہیڈکوارٹر کے زیرانتظام اس تربیتی مشق کے دوران میں یہ راکٹ داغا گیا تھا۔

بیان میں مزیدکہا گیا ہے کہ ’’اس طرح کی مشقیں کوئی غیر معمولی بات نہیں اور ہم اپنے پیارے ہم وطنوں پرزوردیتے ہیں کہ وہ ایرانی قوم کے مخالفین اور دشمنوں کی جانب سے پھیلائی جانے والی افواہوں پر توجہ نہ دیں‘‘۔

کرج ایران کا ایک حساس مقام گردانا جاتاہے کیونکہ اس میں ٹیسا کمپلیکس میں سنٹری فیوجز پارٹس کی ورکشاپ واقع ہے۔اس کے بارے میں تہران نے کہا تھا کہ اسے گذشتہ سال جون میں تخریبی حملے کا نشانہ بنایا گیا تھا۔واضح رہے کہ سنٹری فیوجزمشینیں یورینیم کی افزودگی کے لیے استعمال کی جاتی ہیں۔

ایران اس وقت ویانا میں مغربی ممالک کے ساتھ 2015ء کے متروکہ جوہری سمجھوتے کی بحالی کے لیے بات چیت کر رہا ہے۔فی الحال اس بات پراختلافات پائے جاتے ہیں کہ سمجھوتے کی بحالی کے لیے ویانا مذاکرات کامیاب ہوں گے یا نہیں۔

امریکا طویل عرصے سے یہ کہتا رہا ہے کہ اگر ایران کے ساتھ سفارت کاری ناکام رہتی ہے تو وہ تفصیل واضح کیے بغیر’’پلان بی‘‘کی طرف رجوع کرے گا۔

دوسری جانب امریکا کا اتحادی اسرائیل بے صبری کا مظاہرہ کررہا ہے اوروہ کئی بار یہ اعلان کرچکا ہے کہ وہ ایران کے جوہری اہداف پرفوجی حملے کی تیاری کررہا ہے اور ضرورت پڑنے پروہ یک طرفہ کارروائی کرے گا۔

ایران نے دسمبر میں اسرائیل کو انتباہ کے طور پر جنگی مشقیں کی تھیں۔پاسداران انقلاب نے کہا تھا کہ وہ کسی بھی اسرائیلی حملے کا جواب دیں گے اور حملوں کے لیے استعمال ہونے والے تمام مقامات کو نشانہ بنائیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں