کرونا وائرس

یواے ای:دولاکھ سے زیادہ مکینوں کو7 دن میں کووِڈ-19 کی ویکسین لگا دی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

متحدہ عرب امارات میں گذشتہ سات دن میں دولاکھ سے زیادہ مکینوں کو کووِڈ-19 کی ویکسین لگائی گئی ہے جبکہ وَبا کے آغاز سے اب تک ویکسین کی دوکروڑ20 لاکھ سے زیادہ خوراکیں لگائی جاچکی ہیں۔

یواے ای کے حکام نے بتایا ہے کہ گذشتہ ہفتےملک بھر میں پی سی آر کے قریباً تیس لاکھ ٹیسٹ کیےگئے ہیں۔کووِڈ-19کے یومیہ کیسوں میں حالیہ اضافے کے ساتھ یواے ای نے شہریوں اور مکینوں کو ویکسین لگانے کی مہم بھی تیز کردی ہے۔

یواے ای کی نیشنل ایمرجنسی کرائسس اینڈ ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این سیما)نے منگل کو اطلاع دی تھی کہ گذشتہ 24 گھنٹے میں ویکسین کی18,821 خوراکیں تقسیم کی گئی ہیں۔اس سے پہلے پیرکو3,871 خوراکیں، اتوارکو 18,542، ہفتہ کو 36,384، جمعہ کو33,792، گذشتہ جمعرات کو35,160 اورگذشتہ بدھ کو 37,695 خوراکیں لگائی گئی ہیں۔

گذشتہ سات روزکے دوران میں مکینوں کوکووِڈ-19 کی مجموعی طورپر206,957 خوراکیں لگائی گئی ہیں جبکہ 2,962,633 ٹیسٹ کیے گئے ہیں۔یواے ای میں اب تک کووِڈ-19 ویکسین کی کل 22,721,111 خوراکیں تقسیم کی جا چکی ہیں۔

این سیما کی رپورٹ کے مطابق 100 فی صد آبادی نے کووِڈ-19 ویکسین کی کم سے کم ایک خوراک حاصل کی ہے اور 92.24 فی صد کو مکمل طور پر ویکسین لگائی جاچکی ہے۔

العربیہ نے رواں ہفتے کے اوائل میں خبردی تھی کہ دسمبر کے دوران میں یواے ای میں کروناوائرس کے روزانہ رپورٹ ہونے والے کیسوں میں 3400 فی صد سے زیادہ اضافہ ہواہے جبکہ یو اے ای میں پورے اکتوبر میں کووِڈ-19 کے روزانہ دو سے تین سو کیسوں کا اندراج ہورہا تھا۔تاہم دسمبر کے آغاز میں یومیہ کیس دو ہندسوں تک گر گئے تھے لیکن گذشتہ ماہ کے آخر میں یومیہ کیس تیزی سے بڑھنا شروع ہوگئے اوران کی تعداد 2426 تک پہنچ گئی تھی۔

منگل کو وزارت صحت و روک تھام (ایم او ایچ اے پی) نے اطلاع دی کہ یواے ای میں گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس کے 2581 نئے کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں اورپہلے سے مہلک وائرس کا شکار ایک مریض چل بسا ہے۔

یواے ای کی وزارت خارجہ اور نیشنل ایمرجنسی کرائسس اینڈ ڈیزاسٹرمینجمنٹ اتھارٹی نے گذشتہ ہفتے کے روز 10 جنوری سے بغیرویکسین والے اماراتی شہریوں کے بیرون ملک سفر پر پابندی عاید کرنے کا اعلان کیا تھا۔

یواے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کی رپورٹ کے مطابق مکمل طور پرویکسین لگوانے والے شہریوں کوبین الاقوامی سفر کا اہل ہونے کے لیے اضافی تقویتی خوراک لگوانے کی بھی ضرورت ہوگی۔اس پابندی کا اطلاق طبی عوارض کا شکار یا انسانی چھوٹ رکھنے والے افراد پر نہیں ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں