امارات کا حوثیوں کے ہاتھوں اغوا بحری جہاز روابی کی فوری آزادی کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اقوام متحدہ میں متحدہ عرب امارات کی خاتون مندوب لانا نسیبہ کا کہنا ہے کہ حوثیوں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے بحری جہاز "روابی" پر طبی امداد لدی ہوئی ہے۔ اس میں جزیرہ سقطری میں قائم میدانی ہسپتال کے لیے ساز و سامان بھی شامل ہے۔

پیر کے روز نسیبہ کا کہنا تھا کہ روابی کے عملے میں مختلف ملکوں سے تعلق رکھنےو الے 11 افراد شامل ہیں۔ مندوب نے مطالبہ کیا کہ روابی جہاز اور اس کے عملے کو فوری طور پر آزاد کیا جائے۔

امارات کی حکومت کی جانب سے عالمی سلامتی کونسل کو بھیجے گئے خط میں خاتون مندوب نے کہا کہ روابی جہاز سے قبل حوثی ملیشیا بحیرہ احمر میں کم از کم تین تجارتی جہازوں کو تحویل میں لے چکی ہے۔ علاوہ ازیں حوثیوں نے 13 بحری جہازوں کو بارودی کشتیوں اور بارودی سرنگوں کے ذریعے نشانہ بنایا۔ خاتون مندوب کے مطابق حوثیوں کی اس قزاقی نے بحیرہ احمر میں بین الاقوامی جہاز رانی اور تجارت کی آزادی کے لیے سنگین خطرات پیدا کر دیے ہیں۔

حوثیوں نے 3 جنوری کی شام سات بجے یمن کی بندرگاہ صلیف کے مغرب میں 25 بحری میل دور اماراتی پرچم بردار بحری کارگو جہاز روابی اغوا کر لیا تھا۔

نسیبہ کے دستخط شدہ خط میں بتایا گیا ہے کہ روابی جہاز کو جس وقت اغوا کیا گیا تو وہ بین الاقوامی جہاز رانی کے روٹ پر گامزن یمن میں جزیرہ سقطری جا رہا تھا۔ جہاز کے عملے میں 7 بھارتی شہری اور ایتھوپیا، انڈونیشیا، فلپائن اور میانمار کا ایک ، ایک شہری شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں