دبئی ایئرپورٹ پرالامارات کے طیارے کے اڑان بھرنے میں ناکامی کی تحقیقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے شہری ہوا بازی کے ریگولیٹر(جی سی اے اے) نے رواں ماہ دبئی کے ہوائی اڈے پرالامارات ایئرلائن کے ایک مسافرجیٹ کے اڑان بھرنے میں ناکامی کی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔

دسمبرمیں دبئی کی ملکیتی فضائی کمپنی کا ایک اور مسافر جیٹ اڑان بھرنے کے فوری بعد فضا میں محو پرواز نہیں ہوسکا تھا۔اس واقعہ کے ایک ماہ سے بھی کم عرصے میں ایئر لائن کے کسی مسافر طیارے کو پیش آنے والے طیارے سے متعلق یہ دوسری تحقیقات ہے۔

الامارات کے ترجمان نے کہا کہ حفاظت کمپنی کی اوّلین ترجیح ہے اور 9 جنوری کو دبئی سے اڑان بھرنے میں ناکامی کے نتیجے میں طیارے کو کوئی نقصان پہنچا تھا اورنہ کوئی شخص زخمی ہوا ہے۔

یہ مسافر طیارہ دبئی سے بھارت کے شہر حیدرآباد جارہا تھا۔اس جیٹ کو ہدایت کی گئی تھی کہ وہ ’’روانگی پر ٹیک آف مسترد کردے‘‘اس کے بارے میں ترجمان نے کہا کہ اس ہدایت پر ’’کامیابی سے عمل‘‘کیا گیا ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کا شعبہ فضائی حادثات انویسٹی گیشن سیکٹر واقعے کی تحقیقات کر رہا ہے۔ ایئرلائن بھی اس کا جائزہ لے رہی ہے۔

فلائٹ ٹریکنگ ویب سائٹ فلائٹ ریڈار24 نے بتایا ہے کہ بوئنگ 777 جیٹ نے اپنا ٹیک آف شروع کیا تو اس وقت ایک اور 777 رن وے پر دوڑ رہا تھا۔اس میں کہا گیا ہے کہ بھاری بھرکم جیٹ کے 100 ناٹ تک پہنچنے کے بعد ٹیک آف ختم کر دیا گیا تھا۔

جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی پہلے ہی اس امر کی تحقیقات کررہی ہے کہ الامارت کی 20 دسمبر کو دبئی سے واشنگٹن ڈی سی جانے والی مسافر پروازکے واقعہ کی تحقیقات کررہی ہے۔فضائی کمپنی نے اس کو پیش آنے والے واقعہ کو سرکاری طور پر’’تکنیکی‘‘قرار دیا ہے۔

انڈسٹری بلاگ دی ایئرکرنٹ نے فلائٹ ریڈار24 کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ مسافرجیٹ دبئی سے اڑان بھرنے کے فوری بعد فضا میں بلند نہیں ہوا تھا اور ایک محلے کے اوپرغیر معمولی طورپر نیچے پرواز کر رہا تھا۔تاہم یہ مسافر طیارہ بہ حفاظت امریکا میں اترگیا تھا۔

جی سی اے اے نے فوری طور پر ان دونوں واقعات پر تبصرے کی درخواست کا جواب نہیں دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں