ابوظبی:ٹینکرمیں آگ لگنے سے تین افراد ہلاک، چھے زخمی؛حوثیوں کا حملے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ابوظبی میں سوموار کو ایندھن کے ٹینکر میں دھماکے سے تین افراد ہلاک اور چھے زخمی ہو گئے ہیں۔

یواے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق دھماکے میں ایک پاکستانی اور دو بھارتی شہری مارے گئے ہیں۔زخمیوں میں بعض حالت کی تشویش ناک ہے۔

برطانوی خبررساں ایجنسی رائٹرز نے اطلاع دی ہے کہ یمن میں ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں نے متحدہ عرب امارات پراس حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

ابوظبی پولیس نے بتایا ہے کہ دھماکے سے تین آئل ٹینکرمتاثر ہوئے ہیں۔پیر کی صبح امارت ابوظبی کے نئے ہوائی اڈے کی توسیعی حصے کے تعمیراتی مقام میں ڈرون گرنے کی وجہ سے آگ لگ گئی تھی۔

حوثی ملیشیا کے ترجمان یحییٰ ساری کے ٹویٹراکاؤنٹ کی ایک پوسٹ کے مطابق حوثی آج سہ پہرمتحدہ عرب امارات میں فوجی کارروائی کے بارے میں تفصیل کا اعلان کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

العربیہ کے نامہ نگار نے بتایا ہے کہ دونوں مقامات پر آگ پر قابو پا لیا گیا ہے اور فضائی ٹریفک متاثر نہیں ہوئی ہے۔دھماکوں سے کسی خاص نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔ آگ لگنے کی وجوہات کی تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔

یواے ای نے 2015 میں عرب اتحاد کے حصے کے طور پر یمن کی خانہ جنگی میں مداخلت کی تھی۔ اس نے2019ء میں اپنی کارروائیوں کو کم کردیا تھا۔اس کے ایک مال بردارجہاز روابی کو حوثی ملیشیا نے یکم جنوری کی رات اغوا کر لیا تھا۔

عرب اتحاد کے مطابق یہ جہاز یمن کے جزیرے السقطری سے سعودی عرب کی بندرگاہ جازان کی طرف جا رہا تھا۔ اس میں جزیرے میں قائم کیے گئے ایک فیلڈ اسپتال کا طبی سامان لدا ہوا تھا جبکہ حوثیوں نے دعویٰ کیا ہے کہ جہاز میں فوجی سازوسامان تھا۔جہاز میں سات ہندوستانی ملاح، ایتھوپیا ،انڈونیشیا ، فلپائن اور میانمار سے تعلق رکھنے والا ایک، ایک سیلر سوار تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں