افغانستان:بادغیس میں 5.6 کی شدت کا زلزلہ،20 سے زیادہ افراد ہلاک،سیکڑوں مکانات تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

افغانستان کے مغربی علاقے میں سوموار کے روززلزلے کے نتیجے میں 20 سے زیادہ افراد ہلاک اور سیکڑوں گھر تباہ ہو گئے ہیں۔

مقامی حکام کی جانب سے سوشل میڈیا پرشیئر کی گئی تصاویرکے مطابق 5.6 کی شدت کے زلزلے نے دوپہر کے وقت مغربی صوبہ بادغیس کے بیشتر علاقوں کو ہلا کررکھ دیا۔اس کے نتیجے میں اینٹوں کے گھر ملبے کا ڈھیربن گئے۔بادغیس ترکمانستان کی سرحد سے متصل واقع ہے۔

بادغیس کی صوبائی انتظامیہ میں اطلاعات وثقافت کے ڈائریکٹر بازمحمد سروری نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ ’’ بدقسمتی سے ہماری ابتدائی اطلاعات سے ظاہرہوتا ہے کہ زلزلے میں خواتین اور بچّوں سمیت 22 افراد ہلاک اور چار زخمی ہوئے ہیں‘‘۔

انھوں نے کہا کہ مجاہدین کچھ متاثرہ علاقوں تک پہنچ چکے ہیں لیکن بادغیس پہاڑی صوبہ ہے اور ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا اندیشہ ہے۔نیززلزلے سے متاثرہ علاقے میں موسلادھار بارش ہو رہی ہے۔ان کا اشارہ طالبان جنگجوؤں کی امدادی سرگرمیوں کی جانب تھا۔

افغانستان کی ہنگامی امور کی وزارت کے ایمرجنسی آپریشنزسنٹر کے سربراہ ملّا جانان سائق نے ہلاکتوں کی تعداد کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ 700 سے زیادہ مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔

بادغیس کے دارالحکومت کے مرکزی اسپتال میں نرسنگ یونٹ کے سربراہ ثناءاللہ ثابت نے بتایا کہ زلزلے میں پانچ زخمیوں کو ان کے یہاں لایا گیا ہے۔ان میں سے زیادہ تر کی ہڈیاں ٹوٹی ہوئی ہیں۔

یورپی بحیرہ روم کے زلزلہ پیمامرکز کے مطابق زلزلے کا مرکز30 کلومیٹر(18.64 میل) کی گہرائی میں تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں