امریکا کا شمالی کوریا سے ’غیرقانونی میزائل تجربات بند‘ کرنے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے شمالی کوریا سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنی غیر قانونی تخریبی سرگرمیاں بند کردے جبکہ پیانگ یانگ نے دو مشتبہ بیلسٹک میزائلوں کے تجربات کیے ہیں۔رواں ماہ اس کا اس طرح کےہتھیاروں کا یہ چوتھا تجربہ ہے۔

محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ’’شمالی کوریا کے بارے میں امریکا کے خصوصی نمائندے سنگ کِم نے جنوبی کوریا اور جاپانی حکام کے ساتھ فون پر بات چیت میں میزائل تجربات پر’’تشویش‘‘کا اظہارکیا ہے اور پیانگ یانگ پر زور دیا کہ وہ کسی پیشگی شرائط کے بغیرمذاکرات کی میز پر لوٹ آئے‘‘۔

انھوں نے جزیرہ نما کوریا کو جوہری ہتھیاروں سے مکمل طور پر پاک کرنے کے امریکا کےعزم کا اعادہ کیا ہے۔اس کے ساتھ ساتھ اپنے اتحادیوں جنوبی کوریا اور جاپان کے دفاع کے پختہ عزم بھی دُہرایا ہے۔

جنوبی کوریا کی فوج کے جوائنٹ چیفس آف سٹاف نے بتایا کہ پیرکوعلی الصباح پیانگ یانگ کے ایک ہوائی اڈے سے مشرق کی جانب دو مختصر فاصلے تک مار کرنے والے بیلسٹک میزائل داغے گئے ہیں۔جاپان نے بھی اس میزائل تجربے کی تصدیق کی ہے۔

یہ نئے سال میں پیانگ یانگ کی جانب سے کیے گئے ہتھیاروں کے تازہ تجربات ہیں۔اس نے ہائپرسونک میزائلوں کا بھی تجربہ کیا ہے۔شمالی کوریا کے لیڈرکم جونگ ان بین الاقوامی پابندیوں اور کرونا وائرس کی وبا کے باوجود اپنی فوج کو مزید مضبوط بنانے کے لیے اپنے ہدف پر عمل پیرا ہیں۔

شمالی کوریا نے امریکا کی جانب سے بحران کے خاتمے کے لیے مذاکرات کی پیش کشوں کا کوئی جواب نہیں دیا ہے بلکہ یہ کہا ہے کہ وہ اپنے خلاف کسی بھی کارروائی کا ’’مضبوط اور یقینی‘‘ردعمل ظاہر کرے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں