یمن اور حوثی

سعودی عرب کی جانب سے متحدہ عرب امارات پرحوثیوں کے حملے کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب نے پیر کے روز متحدہ عرب امارات پر ایران کے حمایت یافتہ یمنی حوثیوں کے مبیّنہ ڈرون حملے کی مذمت کی ہے۔اس کے نتیجے میں ابوظبی میں دوجگہوں پرآگ لگ گئی تھی اور ایندھن کے ایک ٹینکر میں دھماکے سے تین افراد ہلاک اور چھے زخمی ہو گئے ہیں۔

سعودی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’مملکت متحدہ عرب امارات کی سلامتی اوراستحکام کے لیے خطرے کا موجب بننے والی ہرچیز کے مقابلے میں برادر ملک کے ساتھ اپنی مکمل یک جہتی کی تصدیق کرتی ہے۔ حوثی دہشت گرد ملیشیا کی یہ تخریبی کارروائی اس دہشت گرد گروہ کی سنگینی اوراس سے خطے اور دنیا کی سلامتی، امن اور استحکام کو لاحق خطرے کی بھی عکاس ہے‘‘۔

بیان میں مزیدکہا گیا ہے:’’مملکت اس بات پرزور دیتی ہے کہ وہ یمن میں قانونی حکومت کی حمایت کے لیے عرب اتحادی افواج کی قیادت کے ذریعے حوثی ملیشیا کی تمام کوششوں اور دہشت گردی کے طریقوں کا مقابلہ جاری رکھے ہوئے ہے‘‘۔

قبل ازیں ابوظبی پولیس نے اعلان کیا تھا کہ ابوظبی نیشنل آئل کمپنی (اے ڈی این او سی) کے قریب مصفاہ آئی سی اے ڈی 3 کے علاقے میں آج صبح لگنے والی آگ پر قابو پا لیا گیا ہے۔اس آگ کے نتیجے میں ایندھن کے تین ٹینکر دھماکوں سے پھٹ گئے تھے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق اس واقعے میں ایک پاکستانی اور دو ہندوستانی ہلاک ہوئے ہیں جبکہ مزید چھے افراد معمولی اور شدید زخمی ہوئے ہیں۔ پولیس نے بتایا کہ متعلقہ حکام نے واقعے کی تحقیقات شروع کردی ہے۔

ابوظبی کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر نئی تعمیراتی جگہ پر بھی آگ بھڑک اٹھی تھی مگراس پر بغیرکسی جانی نقصان کے قابو پا لیا گیا ہے۔

یمن کی حوثی ملیشیا نے اس حملے کی ذمے داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ اس نے’’متحدہ عرب امارات میں گہری کارروائی‘‘ کی ہے۔

ابوظبی پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی شواہد سے پتاچلتا ہے کہ دو ڈرونزکے گرنے سے دونوں جگہوں پر آگ لگی تھی اوراس کی تحقیقات جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں