یمن اور حوثی

یمن:مآرب میں عرب اتحاد کے فضائی حملوں میں 80 حوثی ’دہشت گرد‘ہلاک،نو گاڑیاں تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عرب اتحاد کے یمن کے شمالی صوبہ مآرب میں ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں کے خلاف فضائی حملے جاری رکھے ہوئے ہیں اور گذشتہ 24 گھنٹے میں ان اہدافی حملوں میں 80’’دہشت گرد‘‘ہلاک اور نو فوجی گاڑیاں تباہ ہوگئی ہیں۔

سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی (ایس پی اے) نے منگل کے روزخبر دی ہے کہ ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں کے متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابوظبی میں مبیّنہ ڈرون حملے کے ایک روزبعد عرب اتحاد نے مآرب میں 17 اہدافی فضائی حملے کیے ہیں۔

حوثیوں نے ستمبر2021 سے مآرب کے صوبائی دارالحکومت پر قبضے کی کوششیں تیزکردی ہیں اور وہ یمنی فوج پرحملے کررہے ہیں۔مآرب یمن کی قانونی حکومت کی عمل داری میں ملک کے شمال میں واحد صوبہ ہے۔

حوثی ملیشیا نے اس کے علاوہ دھماکا خیزمواد سے لدے ڈرونزاور بیلسٹک میزائلوں سے سعودی عرب میں شہری علاقوں اور توانائی کی تنصیبات کو نشانہ بنانے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔

عرب اتحاد ان کارروائیوں کے ردعمل میں یمن میں حوثیوں کے جائزفوجی اہداف پر حملے کر رہا ہے اور شہریوں کو خبردار کررہا ہے کہ وہ پہلے سے نشانہ بنائے گئے مقامات کے قریب جائیں اور نہ وہاں اکٹھے ہوں۔اتحاد نے اس بات پر بھی زور دیا ہے کہ حوثیوں کے خلاف یہ کارروائیاں بین الاقوامی انسانی قوانین کے مطابق جاری رکھی جائیں گی۔

قبل ازیں یمن کے دارالحکومت صنعاء کے شمال میں عرب اتحاد کے فضائی حملے میں حوثی رہنما میجرجنرل عبداللہ قاسم الجنید سمیت چودہ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔عرب اتحاد نے صنعاء میں حوثی ملیشیا کے مضبوط گڑھ اور فوجی کیمپوں کو فضائی بمباری میں نشانہ بنایا ہے اورجبل النبی شعیب میں حوثیوں کے ڈرون ذخیرہ کرنے کے ڈپو اور مواصلات کا نظام تباہ کردیاہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں