امریکا کاسوڈان کوسویلین قیادت والی حکومت کی بحالی تک مالی امداد نہ دینے کا اعلان

سوڈانی عوام کی امن ، انصاف اورآزادی کے لیے جدوجہد کی مسلسل حمایت جاری رکھی جائے گی:بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا نے سوڈان (السودان)کو سویلین قیادت والی حکومت کی بحالی اور تشدد کے خاتمے تک اقتصادی امداد نہ دینے کا اعلان کیا ہے۔

خرطوم میں امریکی سفارت خانے نے جمعرات کو ایک بیان میں یہ انتباہ جاری کیا ہے اور کہا ہے کہ عوام کے امنگوں کے مطابق سول حکومت کے قیام تک سوڈان کوکسی قسم کی امداد بحال نہیں کی جائے گی۔

یہ بیان امریکی معاون وزیرخارجہ مولی فی اور ہارن آف افریقا کے لیے امریکا کے خصوصی ایلچی ڈیوڈ سیٹرفیلڈ کے سوڈان کے دورے کے اختتام پرجاری کیا گیا ہے۔دونوں ایلچیوں نے خرطوم میں فوجی بغاوت مخالف مظاہروں کے دوران میں ہلاک ہونے والے افراد کے اہل خانہ ، سیاسی جماعتوں اور سول سوسائٹی کے نمایندوں سے ملاقات کی ہے۔

امریکی ایلچیوں نے سوڈان کی حکمراں خودمختار کونسل کے فوجی رہ نماؤں سے بھی ملاقات کی ہے۔فوجی قیادت نے’’جامع قومی مکالمے، سیاسی انتقال اقتداراور اتفاق رائے کی بنیاد پرسویلین قیادت والی حکومت کی تشکیل کے عزم کی پیش کش کی ہے‘‘۔

سینیرسفارت کاروں نے یہ بھی واضح کیا کہ امریکاان مقاصد واہداف پرپیش رفت میں ناکامی کے ذمے داروں کےاحتساب کے لیے اقدامات پرغورکرے گا۔انھوں نے اعتماد کی فضا بحال کرنے کے اقدام کے طور پرسوڈان میں نافذ ہنگامی حالت کے خاتمے کی ضرورت پر زوردیا۔

امریکی ایلچیوں نے سوڈانی مظاہرین کے خلاف طاقت کے غیرمتناسب استعمال، بلا امتیازپکڑدھکڑ، جنسی تشدد اوربراہ راست گولیاں چلانے کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔احتجاجی مظاہروں کے دوران میں ہونے والی ہلاکتوں کی شفاف اورآزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا اور ان کے ذمے داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لانے کی ضرورت پر زوردیا۔

انھوں نے امریکا کی جانب سے جمہوریت نوازمظاہرین کے ساتھ یک جہتی کا اظہار کیا اور کہا کہ سوڈانی عوام کی امن ، انصاف اور آزادی کے لیے جدوجہد کی مسلسل حمایت جاری رکھی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں