شاہ سلمان کے زیرصدارت سعودی کابینہ کاکووِڈ-9 کی وَباپھیلنے کےبعدپہلا بالمشافہہ اجلاس

مملکت اوریواے ای میں شہری اہداف کے خلاف یمنی حوثیوں کے حملوں کی مذمت کا اعادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے منگل کے روزالریاض میں کووِڈ-19 کی وبا پھیلنے کے بعد کابینہ کے پہلے بالمشافہہ اجلاس کی صدارت کی ہے۔اس سے پہلے گذشتہ دو سال کے دوران میں کابینہ کے ورچوئل اجلاس منعقد ہوتے رہے ہیں۔

سعودی وزراتی کونسل کا اجلاس الیمامہ محل میں ہوا جس میں سوڈان سمیت متعدد ممالک کے ساتھ دو طرفہ تعلقات میں ہونے والی حالیہ پیش رفت، مملکت اور متحدہ عرب امارات کے خلاف ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے حالیہ ڈرون اورمیزائل حملوں سمیت مختلف امورپرتبادلہ خیال کیاگیا۔

ایس پی اے کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق وزارتی کونسل نے جنوبی کوریا کے صدرمون جے ان کے حالیہ دورۂ سعودی عرب کے نتائج پرتبادلہ خیال کیا۔اس موقع پرجنوبی کوریا کی کمپنی ایل جی نے مملکت میں اپنا علاقائی ہیڈ کوارٹرقائم کرنے کااعلان کیا تھا۔

رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ سعودی عرب اور جنوبی کوریامختلف شعبوں میں باہمی مفاد میں علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر دوطرفہ تعلقات اورتعاون کو فروغ دیں گے۔

وزیرتجارت اور قائم مقام وزیراطلاعات ڈاکٹرماجد بن عبداللہ القصبی نے بتایا کہ وزراتی کونسل نے ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں کے حملوں سے پیدا ہونے والی صورت حال پرغور کیا ہے۔کابینہ نے مملکت اور امارات میں شہری اہداف کے خلاف حملوں کو مسترد کرتے ہوئے ان کی مذمت کا اعادہ کیا ہے۔

وزیراطلاعات نے کہا کہ کابینہ نے بین الاقوامی امن و سلامتی کے تحفظ کے لیے عالمی برادری خصوصاً سلامتی کونسل سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ حوثیوں کے اس جارحانہ طرزِعمل کی روک تھام کے لیے اقدامات کرے۔

ایس پی اے کے مطابق کونسل نے مملکت کے جنگ زدہ یمن میں انسانی امدادو بھلائی کے کردار پرروشنی ڈالی جس کی نمائندگی شاہ سلمان مرکز برائے ریلیف اورہیومینٹیرین ایکشن کرتا ہے۔اس کے تحت مختلف پروگراموں اورامدادی منصوبوں کے ذریعے یمن میں خدمات مہیا کی جارہی ہیں اور ترقیاتی منصوبوں پر عمل درآمد کیا جارہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں