سعودی عرب: ویڈیوگیمزکی صنعت کی ترقی کے لیے نئے ای اسپورٹس گروپ کاقیام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے اپنے ہاں ویڈیوگیمز کی صنعت کوترقی دینے کے لیے ایک نیا گروپ قائم کیا ہے۔اس کامقصد مملکت کی تیل پرمنحصر معیشت کو متنوع بنانے کے لیے آمدن کے مزید ذرائع پیدا کرنا ہے۔

واضح رہے کہ قریباً ساڑھے تین کروڑ نفوس کی آبادی کے حامل سعودی عرب میں ویڈیو گیمنگ اور ای اسپورٹس کی مقبولیت میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ان کے شائقین کی اکثریت کی عمر25 سال سے کم ہے۔

مارکیٹ ریسرچرنیکو پارٹنرز کے مطابق سعودی عرب کی گیمزمارکیٹ 2021ء میں ایک ارب ڈالر تک پہنچ گئی تھی اور یہ خطۂ خلیج کےعرب ممالک میں سب سے زیادہ مالیت ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی کے مطابق ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی سربراہی میں سیوی گیمنگ گروپ کا مقصد مقامی اور بین الاقوامی سطح پر ویڈیو گیمنگ اور ای اسپورٹس کی صنعت کو ترقی اور فروغ دیناہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ (پی آئی ایف) کی معاونت سے اس گروپ نے ای اسپورٹس کمپنیوں ای ایس ایل گیمنگ اور فیس اِٹ کوحاصل کرلیا ہے۔سیوی گیمنگ گروپ کا قیام’’ترقی کے مواقع مہیا کرنے اورآمدن کے متنوع ذرائع کو فروغ دینے میں معاون ثابت ہوگا‘‘۔

پی آئی ایف کے ایک بیان کے مطابق اس نئے گروپ کے آغازکا مقصد’’سعودی عرب کی معیشت میں ترقی اور تنوع کے مواقع پیدا کرنا ہے تاکہ مملکت کے وژن 2030 کے مقاصد کے حصول میں مدد مل سکے‘‘۔

نیکو پارٹنرز کا کہنا ہے کہ سعودی عرب، متحدہ عرب امارات اورمصر میں 2025ء تک گیمرز کی مجموعی تعداد آٹھ کروڑ 58 لاکھ سے متجاوز ہونے کی پیشین گوئی کی گئی ہے۔ان سے 3.1 ارب ڈالر کی آمدنی حاصل ہوگی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں