ایران کے ایجنٹوں سے نہیں لڑیں گے ، آکٹوپس کے سر کو کچلیں گے : نفتالی بینیٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر اعظم نفتالی بینیٹ کا کہنا ہے کہ اسرائیل ایرانی جارحیت سے لڑنے کے لیے اپنی حکمت عملی جاری رکھے گا خواہ عالمی طاقتیں ویانا مذاکرات میں ایران کے ساتھ کسی معاہدے تک پہنچ جائیں۔

اسرائیلی اخبار یروشلم پوسٹ کو دیے گئے ایک انٹرویو میں بینیٹ نے دو ٹوک انداز میں کہا کہ "ہم خود سے اپنی حفاظت کریں گے ،،، اگرچہ کوئی معاہدہ طے بھی پا جائے تو ہم اس کے پابند نہیں ،،، ہم تصرف میں اپنی آزادی برقرار رکھیں گے"۔

ایران پر پابندیوں میں نرمی کے خلاف علانیہ گفتگو کرتے ہوئے بینیٹ کا کہنا تھا کہ "ہمارے اور امریکیوں کے درمیان ہر چیز پر اتفاق رائے نہیں ہوتا"۔

بینیٹ کے مطابق سمجھوتے کے تحت جو اربوں ڈالر تہران کے فاسد اور کمزور نظام کو بھیجے جائیں گے یہ ایک غلطی ہو گی۔ اس لیے کہ یہ رقم خطے میں امریکیوں اور ان کے حلیفوں کے خلاف دہشت گردی میں استعمال کی جائے گی۔ ایران اپنے ایجنٹوں کے ذریعے امریکیوں پر حملے کرے گا۔

اسرائیلی وزیر اعظم نے واضح کیا کہ "ایران انتہائی کمزور ہے اور اس کی کرنسی گرتی چلی جا رہی ہے۔ ملک میں پانی سے محرومی ہے اور حکومت کے خلاف بڑے پیمانے پر مظاہرے ہو رہے ہیں ... ایران نہایت کمزور ہاتھوں کے ساتھ کھیل رہا ہے مگر وہ دھوکے باز ہے"۔

نفتالی بینیٹ نے کہا کہ "ماضی میں اسرائیل چال میں پھنس کر اخبوط (آکٹوپس) کے ہاتھوں سے لڑنے میں مصروف ہو گیا جب کہ اخبوط (آکٹوپس) کا سر تو خود ایران ہے ... ان (ایرانیوں) کا ہمارے خطے میں کوئی کام نہیں ... میں ایران کو شام میں یا ہماری کسی بھی سرحد پر نہیں دیکھنا چاہتا ہوں"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں