تھائی لینڈ میں متعدد چھوٹے بم دھماکے،ایک شخص زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

تھائی لینڈ کے جنوبی صوبے یالا میں متعدد بم حملوں میں ایک شخص زخمی ہوگیا ہے۔

تھائی پولیس کے نائب ترجمان کسانا فتھاناچارون نے ہفتے کے روز بتایا ہے کہ جمعہ کو رات گئے یالاشہر میں 13 چھوٹے دھماکے ہوئے ہیں۔ان میں زیادہ تر شاہراہوں کے کنارے واقع دکانوں، مارکیٹوں ، جانوروں کے اسپتال اور کارمرمت کی ورکشاپوں کے سامنے ہوئے ہیں۔

پولیس کو ہفتے کے روز تین دھماکاخیزآلات ملے ہیں، وہ پھٹ نہیں سکے تھے۔یہ اسپرے کین اور دھاتی پائپوں سے بنائے گئے تھے اور ان کے ساتھ ٹائمرلگے ہوئے تھے۔ کسانا کے بہ قول پولیس کو شُبہ ہے کہ ان دھماکوں کا مقصد کسی قسم کے جانی نقصان یا لوگوں کوزخمی کرنے سے زیادہ امن عامہ میں خلل انداز ہونا تھا۔

تشدد کے واقعات پرنظر رکھنے والے ایک گروپ ڈیپ ساؤتھ کے مطابق بدھ مت اکثریت کے حامل تھائی لینڈ کے نسلی صوبوں یالا، پٹانی اور ناراتھیوٹ میں کئی دہائیوں سے علاحدگی پسندوں کی بغاوت جاری ہے اور اس نے 2004 سے اب تک 7300 سے زیادہ افراد کی جان لے لی ہے۔

باغی گروپ پڑوسی ملک ملائیشیا کی سرحد سے متصل ان صوبوں کوآزادی دینے کا مطالبہ کررہے ہیں۔یہ علاقے برطانیہ کے ساتھ معاہدے کے حصے کے طور پر1909 میں تھائی لینڈ کے ساتھ الحاق شدہ پٹانی نامی سلطنت کا حصہ تھے۔

یہ دھماکے تھائی حکومت اور باغی گروپوں کے درمیان مذاکرات دوبارہ شروع ہونے کے چند ہفتے کے بعد ہوئے ہیں۔تھائی حکومت نے کووڈ-19 کی وبا کی وجہ سے دوسال قبل ان مذاکرات کوملتوی کردیا تھا۔

تھائی لینڈ کے جنوب میں ہونے والے زیادہ ترحملوں کی طرح جمعہ کےبم دھماکوں کی ذمے داری بھی کسی گروپ نے قبول کرنے کاکوئی دعویٰ نہیں کیا ہے۔مرکزی باغی گروپ باریسن ریولوسی نیشنل نے بھی ان دھماکوں سے متعلق کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں