جائنٹس بریگیڈزایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے حملوں کوپسپاکرنے کوتیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کی حمایت یافتہ جائنٹس (اعمالقہ) بریگیڈز فورسز نے کہاہے کہ اس کے بعض یمنی جنگجوایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے خلاف لڑائی میں دفاعی اقدامات کے حصے کے طور پر یمن کے جنگ زدہ علاقوں میں محاذِ اوّل پر موجود رہیں گے۔

جائنٹس بریگیڈز نے حوثیوں کو تیل کی دولت سے مالامال صوبہ شبوہ سے پیچھے دھکیلنے اورتزویراتی اہمیت کے حامل شہر مآرب کی طرف جارحیت سے روکنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔اس نے کہا ہے کہ وہ اب ان کارروائیوں کے بعد اپنی فورسزکی جنگ زدہ علاقوں میں نئے سرے سے صف بندی کررہی ہے۔

یہ حیرت انگیزاعلان متحدہ عرب امارات پرایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے دو ڈرون اور میزائل حملوں کے بعد کیا گیا ہے۔ابوظبی پرپہلے ڈرون اور میزائل حملے میں ایک پاکستانی سمیت تین افراد ہلاک اور چھے زخمی ہوگئے تھے۔

حوثیوں نے عرب اتحاد سے یمن میں میدانِ جنگ میں حالیہ شکست کے بعد خبردارکیا ہے کہ جب تک اس طرح کی کارروائیاں روک نہیں دی جاتی ہیں،اس وقت تک یواے ای پرحملے جاری رکھے جائیں گے۔

جائنٹس بریگیڈزکے ایک عہدہ دارنے نام ظاہرنہ کرنے کی شرط پراے ایف پی کو بتایا کہ فورسز نے صوبہ شبوہ کو آزاد کرانے اور اسے محفوظ بنانے میں اپنا مشن مکمل کرلیا ہے اورحوثیوں کومآرب کے جنوب میں واقع ضلع حریب سے پیچھے دھکیل دیا ہے۔

صوبہ مآرب میں جائنٹس بریگیڈز نے حوثیوں کے زیرقبضہ علاقہ واگذار کرانے کا مشن یمنی حکومت پرچھوڑ دیا ہے۔اس کے پاس لاکھوں فوجی ہیں اوروہی حوثیوں کو مآرب سے نکالنے کی کارروائی کریں گے۔

یمنی حکومت کے تحت فوجی مآرب شہر کے جنوب، شمال اور مغرب میں گذشتہ کئی ماہ سے حوثی ملیشیا کے خلاف لڑائی میں مصروف ہیں۔عرب اتحاد کے حصے کے طور پر لڑنے والے جائنٹس بریگیڈز نے شبوہ میں تعیناتی کے بعد حوثی ملیشیا کو شدید دھچکا پہنچایا ہے۔

شبوہ میں شکست کے بعد حوثیوں نے17 جنوری کو ابوظبی پر مہلک حملہ کیا تھا۔اس سے قبل انھوں نے 3 جنوری کو متحدہ عرب امارات کے جھنڈے والے بحری جہاز پرقبضہ کر لیا تھا۔ انھوں نے ایک ہفتے کے بعد24 جنوری کو ابوظبی پر دوسرا میزائل حملہ کیا تھا لیکن اس کو ناکام بنا دیاگیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں