امریکا: برفانی طوفان کے بعد سردی کی شدید لہر، 1400 پروازیں منسوخ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکا کے مشرقی علاقوں میں اتوار کے روز برفانی طوفان کے بعد شدید سردی کی لہر کے باعث لوگ گھروں میں محصور جب کہ ہزاروں لوگ بجلی سے محروم ہو گئے ہیں۔ چودہ سو پروازیں منسوخ ہونے کی وجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

امریکا کی شمال مشرقی ریاستوں میں برفانی طوفان کے بعد شدید سردی کی لہر جاری ہے۔فلاڈیلفیا، نیویارک اور میساچیوسٹس میں شدید برفباری کے بعد درجہ حرارت نقطۂ انجماد سے نیچے گر گیا۔ میساچیوسٹس کے قصبے شیرون میں 30 انچ تک برف پڑی۔

میساچیوسٹس جہاں ایک لاکھ سے زائد افراد بجلی سے محروم ہیں شدید سرد ہوائیں چلتی رہیں جس کی وجہ سے بجلی کی بحالی کے لیے کام کرنے والے کارکنان کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

خبر رساں ادارے 'ایسوسی ایٹڈ پریس' (اے پی) کے مطابق کسی دوسری امریکی ریاست میں بڑے پیمانے پر بجلی کے نظام میں خلل رپورٹ نہیں ہوا۔

میساچیوسٹس کے علاقے کیپ کوڈ میں 134 کلومیٹر فی گھنٹہ کے حساب سے تیز ہوائیں رپورٹ کی گئی ہیں۔ تیز ہواؤں اور برف کی وجہ سے کئی گلیاں اور سڑکیں سفر کے قابل نہیں رہیں۔

بوسٹن جنوری 29
بوسٹن جنوری 29

بوسٹن شہر میں ہفتے کے روز برف باری کا 19 برس کا ریکارڈ ٹوٹ گیا جب ایک دن میں 23.6 انچ برف ریکارڈ کی گئی۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ موسمیاتی تبدیلی اور گرم ہوتے سمندروں کی وجہ سے طوفانوں کی شدت میں بھی اضافہ ہو رہا ہے۔

یونیورسٹی آف اوکلاہوما کے میٹرولوجی کے پروفیسر جیسن فرٹاڈو نے 'ایسوسی ایٹڈ پریس' سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پہلے سے زیادہ گرم سمندر یقینی طور پر طوفانوں کے نظام کی شدت میں اضافے اور اس کے لیے زیادہ نمی فراہم کرنے کا باعث بن رہے ہیں۔ لیکن ان کے مطابق شدید طوفانوں کی یہی واحد وجہ نہیں ہے۔

مغربی نیویارک
مغربی نیویارک

'اے پی' کے مطابق چھٹی کے روز آنے والے طوفان کی وجہ سے اکثر لوگ اور بچے گھروں پر تھے اور کم ہی لوگ سفر کر رہے تھے۔ امریکاکی دس شمال مشرقی ریاستوں میں برفانی طوفان کی پیشین گوئی کی گئی تھی۔

امریکی دارالحکومت واشنگٹن اور شہر بالٹی مور میں کم برف پڑی ہے لیکن امید کی جا رہی ہے کہ برفانی طوفان اتوار کی صبح تک کینیڈا میں داخل ہو جائے گا جہاں کئی صوبوں میں وارننگ جاری کر دی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں