کرونا وائرس

یوکرین سے وطن لوٹنے والے سعودی شہری پی سی آر ٹیسٹ سے مستثنیٰ قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی جنرل اتھارٹی برائے سول ایوی ایشن (جی اے سی اے) نے یوکرین سے وطن لوٹنے والے شہریوں اوران کے زیرکفالت غیرسعودیوں کوآمد پرکرونا وائرس کے پی سی آر ٹیسٹ سے مستثیٰ قرار دے دیا ہے۔

اس چھوٹ کا اطلاق مملکت میں کام کرنے والی تمام فضائی کمپنیوں کے ذریعے آنے والے مسافروں پرہوگا۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کی رپورٹ کے مطابق پی سی آر ٹیسٹ اور آمد پر منفی نتیجہ پیش کرنے کے بجائے مسافروں کوآمد کے 48 گھنٹے کے اندر ٹیسٹ کراناہوگا۔ان ضوابط پر عمل نہ کرنے کی صورت میں قانونی کارروائی ہوگی۔

یہ فیصلہ یوکرین میں روس کے وسیع پیمانے پر حملے کی وجہ سے پیدا ہونے والی بدامنی کے پیش نظر کیا گیا ہے۔گذشتہ چھے روس سے جاری جنگ کےنتیجے میں لاکھوں یوکرینی بے گھر ہوچکے ہیں جبکہ یورپی یونین ان کے لیے اپنی سرحدیں کھول رہی ہے جس کے نتیجے میں بہت سے غیر ملکی بھی جنگ زدہ ملک میں پھنس کررہ گئے ہیں۔

واضح رہے کہ 9فروری کو سعودی عرب نے اعلان کیا تھا کہ بیرون ملک سے آنے والے تمام سعودی شہریوں اور غیر ملکیوں کو آمد پر منفی پی سی آر یا اینٹی جن ٹیسٹ کا نتیجہ پیش کرنے کی ضرورت ہوگی جو روانگی کے وقت سے 48 گھنٹے کے دوران میں کرایا گیا۔ان مسافروں کی کووڈ-19 کی ویکسین لگوانے کی حیثیت کچھ بھی ہو، انھیں یہ ٹیسٹ کرانا ہوگا۔

اگرچہ آٹھ سال سے کم عمر کے بچے اس قاعدے سے مستثنیٰ ہیں لیکن ان کے روانگی والے ملک کی جانب سے کووڈ-19 کے عاید کردہ ضوابط اور نافذ پروٹوکول پر عمل کرنے کی ضرورت ہوگی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں