روس اور یوکرین

بائیڈن نے پوتین کو روس کے خلاف مزید سخت اقدامات کی دھمکی دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی صدر جو بائیڈن نے اپنے روسی ہم منصب ولادی میر پوتین کو مزید پابندیاں عائد کرنے کی دھمکی دی ہے۔ انہوں نے روسی طیاروں کے لیے امریکی فضائی حدود بند کرنے کا اعلان کیا۔ اس سے قبل یورپی یونین اور کینیڈا بھی یوکرین پر فوجی حملے کے جواب میں روس کے لیے اپنی فضائی حدود کی بندش کا اعلان کر چکے ہیں۔

آج بدھ کے روز اسٹیٹ آف دی یونین سے بائیڈن کے خطاب کا بڑا حصہ روسی صدر پر نکتہ چینی پر مشتمل تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ پوتین دنیا سے کٹ کر تنہا رہ گئے ہیں۔ روسی کرنسی روبل 33% گراوٹ کا شکار ہو چکی ہے اور روسی معیشت رُو بہ زوال ہے۔

بائیڈن نے اپنے روسی ہم منصب ولادی میر پوتین کو "آمر" قرار دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پوتین سمجھ رہے تھے کہ یوکرین پر حملے کے بعد مغرب کا موقف انقسام کا شکار ہو جائے گا تاہم روسی صدر اپنے اندازے میں غلطی کر بیٹھے۔

بائیڈن کے مطابق امریکا تباہ شدہ اداروں کی تعمیر نو کے لیے یوکرین کو ایک ارب ڈالر دے گا۔ انہوں نے واضح کیا کہ امریکی فوج یوکرین میں جاری جنگ میں مداخلت نہیں کرے گی۔ بائیڈن کا کہنا تھا کہ "ہم یوکرین کے شانہ بشانہ نہیں لڑیں گے تاہم ہم نیٹو افواج کو مضبوط بنائیں گے"۔

امریکی صدر نے یوکرین کے عوام اور ان کے صدر کی ہمت کو سراہتے ہوئے کہا کہ وہ پوری شجاعت اور بسالت سے جنگ لڑ رہے ہیں۔ بائیڈن کے مطابق روس پر پابندیوں کے تباہ کن اثرات سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں۔

ادھر روسی صدر ولادی میر پوتین نے ایک فیصلے میں ملک سے 10 ہزار ڈالر سے زیادہ غیر ملکی کرنسی باہر بھیجنے پر پابندی لگا دی ہے۔

امریکا نے پیر کے روز اپنا یہ موقف دہرایا تھا کہ یوکرین کے خلاف شروع کیے گئے روسی فوجی آپریشن پر ماسکو کے احتساب کی ضرورت ہے۔ امریکا ، برطانیہ ، یورپ اور کینیڈا ہفتے کے روز روس کو عالمی مالیاتی نظام SWIFT سے نکال چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں