زیلنسکی یوکرین کی یورپی یونین میں شمولیت سے متعلق پُرامید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے بدھ کے روز کہا کہ وہ یورپی یونین میں یوکرین کے الحاق کے بارے میں ’اچھی خبر‘ کی توقع رکھتے ہیں۔

یوکرینی صدر نے اپنے ملک پر روسی حملے کے بعد یورپی یونین میں شمولیت کے لیے باضابطہ درخواست دی ہے۔

قبل ازیں یوکرین کے صدر زیلنسکی نے کہا کہ وہ اپنا دن عام یوکرینی شہریوں کی طرح گذارتے ہیں جو ہر وقت خطرے کی زد میں رہتے ہیں اور ملک کے دفاع کی کوشش کرتے ہیں۔ انہوں نے روسی حملوں سے ہونے والی ہلاکتوں اور تباہی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا روسی بمباری کے نتیجے میں کے بہت سے اہم مقامات کے ساتھ ساتھ انفراسٹرکچر کو متاثر کیا۔

ایسا لگتا ہے کہ یوکرین میں روسی فوجی آپریشن کے دوران یوکرین کے صدرایک عام شہری کی طرح روسی جنگی مشین کا سامنا کررہے ہیں۔

زیلنسکی نے جنگ کے حالات کے باوجود پریس انٹرویو کیا اور اپنی جنگ کے وقت روز مرہ کے معمولات بیان کیے۔ انہوں نے کہا کہ میری ساری ٹیم اس وقت کیف میں موجود ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ میرے پاس آزادی کے ساتھ ا کام کرنا اورسونا ہے۔

یوکرین کے صدر نے اپنے خاندان سے ملاقات نہ ہونے پر افسوس کا اظہار کیا۔ خاص طور پر چونکہ روس کی طرف سے انہیں اور ان کے خاندان کو نشانہ بنانے کے خلاف خبردار کیا تھا۔

جب رپورٹر نے اس سے پوچھا کہ کیا آپ اپنے خاندان کو دیکھ سکتے ہیں؟ کیا آپ اپنے بچوں کو دیکھ سکتے ہیں؟"

"نہیں،" زیلنسکی نے جواب دیا "نہیں میں نہیں کر سکتا۔"

رپورٹر نے اس سے پوچھا کہ آپ نے انہیں آخری بار کب دیکھا تھا؟

یوکرائنی صدر نے جواب دیا ’’اس جنگ سے پہلے‘‘۔

چوالیس سالہ زیلنسکی نیم فوجی وردی فوج کے سخت پہرے میں ایک عمارت میں مقیم ہیں۔ وہ محتاط تھے اور ہنسی مذاح کررہے تھے۔ اس دوران انہیں اچانک اپنی ٹیم کے لیڈر آندرے یرماک کی بات سننی جس میں انہوں نے ایک نئے حملوں میں نشانہ بنائے گئےاہداف کا بتایا۔

یرماک نے انہیں بابین یار پر بمباری کے بارے میں بتایا جو یوکرین میں ایک تاریخی یادگار پر مشتمل ہے۔

میزائل کو نشانہ بنانے کے نتیجے میں متعدد یوکرینی شہری مارے گئے۔ زیلنسکی نے اپنے ملک کے خلاف جنگی مشین کے نتائج پر غم اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے بین الاقوامی حمایت کی موجودگی اور یوکرین پرمسلط کی گئی جنگ میں مزاحمت جاری رکھنے کا عزم کیا۔

زیلنسکی پر قاتلانہ حملے کی کوشش ناکام

یوکرین کی قومی سلامتی اور دفاعی کونسل کے سربراہ اولیکسی ڈینیلوف نے انکشاف کیا یوکرین کی افواج نے صدر زیلنسکی کے قتل کی کوشش کو ناکام بنا دیا ہے۔

مکتوب میں صدر زیلنسکی اور ان کے خاندان کو نشانہ بنانے کے لیے کیف میں روسی تخریبی گروہوں کے داخلے سے خبردار کیا گیا تھا۔

ڈینیلوف نے تصدیق کی کہ قاتلانہ حملے کے پیچھے چیچن سپیشل فورسز کا ایک معروف یونٹ تھا اور اسے مکمل طور پر ختم کر دیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں