روس اور یوکرین

عالمی جوہری ایجنسی کو چرنوبل سمیت یوکرینی جوہری تنصیبات پر تشویش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بین الاقوامی توانائی ایجنسی’آئی اے ای اے‘ کو یوکرین کی جوہری تنصیبات بالخصوص چرنوبل جوہری پلانٹ پرتشویش ہے۔

یورپی یونین نے بدھ کے روز "سخت تشویش" کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یوکرین پر روس کی فوجی کارروائی کے بعد وہاں پر جوہری خطرات، سلامتی اور جوہری تنصیبات کے خطرات بڑھ گئے ہیں۔

ویانا میں یورپی یونین کے مشن نے بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی سے مطالبہ کیا کہ "چرنوبل نیوکلیئر پلانٹ اور اس کے آس پاس روسی افواج کی سرگرمیوں کے اثرات کے بارے میں معلومات کے لیے یوکرینی حکام کے ساتھ قریبی رابطے میں رہیں۔"

انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی نے فوجی کارروائیوں کی وجہ سے جوہری تابکاری کے اخراج کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے مزید کہا کہ جوہری تنصیبات رکھنے والے ملک میں فوجی تنازع تشویشناک ہے۔ اینجنسی یوکرین میں جوہری تنصیبات کی حفاظت کی دور سے نگرانی کرتی ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ یوکرین پر حملہ جوہری سلامتی کو متاثر کرتا ہے جس کی وجہ جوہری مواد اور تنصیبات تک ممکنہ رسائی ہے۔

ایجنسی نے اشارہ کیا کہ اسے یوکرین کی جانب سے چرنوبل جوہری تنصیب کے تحفظ کی درخواست موصول ہوئی ہے۔ ہم جوہری تنصیبات کو محفوظ بنانے کے لیے روس اور یوکرین کے ساتھ بات کر رہے ہیں۔

جوہری تنصیبات کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے یوکرین میں تنازع کو ختم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

یوکرین کی نیوکلیئر انرجی ریگولیٹری ایجنسی نے اعلان کیا ہے کہ روسی فوج کے قبضے کے بعد چرنوبل نیوکلیئر پلانٹ کے قریب کے علاقے میں گاما تابکاری کی معمول سے زیادہ سطح کا پتہ چلا ہے۔

یوکرین کے سٹیٹ نیوکلیئر ریگولیٹری انسپکٹوریٹ نے کہا کہ چرنوبل کے علاقے میں گاما تابکاری کی اعلی سطح کا پتہ چلا ہے لیکن اس اضافے کی مقدار کی تفصیلات فراہم نہیں کیں۔

جاپان میں یوکرین کے سفیر سرگئی کورسنسکی نے خبردار کیا کہ اگر روسیوں نے چرنوبل ری ایکٹر کو تباہ کر دیا تو یورپ کو جوہری آلودگی کا خطرہ ہو گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں