روس اور یوکرین

روس کا مغربی انٹیلی جنس پرغیر ملکی جنگجوؤں کو یوکرین منتقل کرنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس کے خارجہ انٹیلی جنس کے ڈائریکٹر سرگئی ناریشکن نے جمعہ کو کہا کہ مغربی انٹیلی جنس سروسز نے غیر ملکی جنگجوؤں کو یوکرین منتقل کرنا شروع کر دیا ہے۔

اسپوتنک نیوز ایجنسی کے مطابق ناریشکن نے اس بات پر توجہ دلائی کہ یوکرین کی غیر جانبدار حیثیت ان کے ملک کے لیے انتہائی اہم ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یوکرین کی غیر جانبداری مغرب کی طرف سے حملوں کو پسپا کرنے کے لیے ایک ضروری رکاوٹ ہے۔ مغرب نہ صرف روس کا محاصرہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے بلکہ اسے تباہ بھی کر رہا ہے۔

1,812 فوجی تنصیبات کی تباہی

دریں اثنا روسی وزارت دفاع نے جمعہ کو اعلان کیا کہ مسلح افواج نے یوکرین میں موجودہ آپریشن کے دوران 1,812 فوجی تنصیبات کو تباہ کر دیا ہے۔

وزارت دفاع کے ترجمان ایگور کوناشینکوف نے ایک بیان میں کہا کہ روسی مسلح افواج یوکرین کی فوجی تنصیبات پر حملے جاری رکھے ہوئے ہیں۔

انہوں نے وضاحت کی کہ تباہ شدہ اہداف میں یوکرین کی مسلح افواج کے 65 کمانڈ اور مواصلاتی مراکز، 56 S-300 طیارہ شکن میزائل سسٹم، Buk M-1، اور 59 ریڈار سٹیشنز" شامل ہیں۔

طیاروں کو نشانہ بنانا

روسی فوجی آپریشن میں یوکرین میں زمین پر 49 اور فضا میں 13 طیارے، 635 ٹینک اور دیگر بکتر بند جنگی گاڑیاں، 67 راکٹ لانچرز، 252 فیلڈ آرٹلری اور مارٹر، خصوصی فوجی گاڑیوں کے 442 یونٹوں کے ساتھ ساتھ 54 ڈرونز کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

روس کی طرف سے گذشتہ جمعرات کو شروع کیے جانے والا فوجی آپریشن ہفتوں کی کشیدگی اور یوکرین کی سرحد پر روسی فوج کی تعیناتی کے بعد اور روسی صدر پوتین کی جانب سے مشرقی یوکرین میں علیحدگی پسند ڈونیٹسک اور لوگانسک علاقوں کی خودمختاری کو تسلیم کرنے کے اپنے فیصلے کے اعلان کے چند دن بعد سامنے آیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں