سعودی عرب میں پہلےعالمی دفاعی شو کاآغاز،عوام الناس کوشرکت کی دعوت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کا پہلا عالمی دفاعی شو اتوار کی صبح عوام کے لیے کھول دیا گیا ہے۔یہ شو مملکت کے فوجی اخراجات کو مقامی بنانے کی مہم کا حصہ ہے۔

شو میں 40 سے زیادہ ممالک کے قریباً 600 نمائش کنندگان حصہ لے رہے ہیں۔منتظمین نے پیشین گوئی کی ہے کہ 30 ہزار سے زیادہ افراد شو میں شرکت کریں گے۔یہ شو اتوار سے بدھ تک دارالحکومت الریاض کے شمال میں 800,000 مربع میٹررقبے پرواقع نمائش گاہ میں منعقد ہورہاہے۔

یہ نمائش ہردو سال کے بعد منعقد ہوا کرے گی ۔اس کا اہتمام مملکت کی جنرل اتھارٹی برائے ملٹری انڈسٹریز(جامی،جی اے ایم آئی) نے کیا ہے۔درجنوں ممالک کے وفود سیکڑوں مقامی اور بین الاقوامی نمائش کنندگان اپنی مصنوعات پیش کررہے ہیں۔اس مقصد کے لیے مختلف پویلین بنائے گئے ہیں اوران میں نمائش کنندگان فضا،زمین، سمندراور خلائی دفاعی نظام سے متعلق مختلف ٹیکنالوجیز اور آلات کی نمائش کریں گے۔

جامی کے گورنراحمد الاوہالی نے ایک بیان میں کہا کہ 6 مارچ (نمائش)،2030 تک اپنے فوجی اخراجات کا 50 فی صد مقامی بنانے کی جانب مملکت کے سفرمیں ایک اہم سنگ میل کی علامت ہوگی۔

انھوں نے کہا کہ ہم نے عالمی دفاعی شو کے پہلےایڈیشن میں شرکت کے لیے زبردست عالمی دلچسپی ملاحظہ کی ہے اور ہم صنعت میں جدت طرازی کو آگے بڑھانے، نیٹ ورکنگ اور سرحد پار شراکت داری کاسازگار ماحول فراہم کرنے کے منتظر ہیں۔

شو میں روزانہ تھیم پرمبنی پینل مباحثوں میں نمائش میں پیش کردہ ٹیکنالوجی کی تفصیل بیان کی جائے گی اور ان کے مختلف پہلووں پر غور کیا جائے گا۔کمان اورکنٹرول مرکزمیں دن میں چھے بار20 منٹ کا سائبر ڈیفنس شو بھی منعقد کیا جائے گا۔

نمائش کے اسٹارٹ اپ زون میں دنیا بھر کی چھوٹی اور درمیانے درجے کی کمپنیوں کی پیش کردہ کچھ جدید ترین ٹیکنالوجیزدکھائی جائیں گی۔آخری دن مستقبل کے ٹیلنٹ پروگرام کے تحت مملکت کے ایس ٹی ای ایم اداروں سے تعلق رکھنے والے 5000 باصلاحیت سعودی طلبہ کے لیے شو اپنے دروازے کھولے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں