مساجد میں معمول کی عبادت کی خوشی ناقابل بیان ہے: وزیر مذہبی امور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے وزیر برائے مذہبی امورنے کہا ہے کہ مسجد حرام اور مسجد نبوی سمیت مملکت بھر کی مساجد میں عبادات کی بحالی پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ مساجد میں عبادت کی بحالی سے خوشی ناقابل بیان ہے۔

صدارت عامہ برائے امور حرمین شریفین ترجمان ہانی بن حسنی حیدر نے کہا کہ وزارت داخلہ نے مسجد حرام اور مسجد نبوی سمیت تمام مساجد میں سماجی دوری پر پابندی ختم کردی ہے تاہم تمام مساجد میں آنے والے نمازیوں کے لیے ماسک کی پابندی لازمی ہے۔ نئی پالیسی کا اطلاق آج اتوار سے کردیا گیا ہے۔

سرکاری ترجمان نے زور دے کر کہا کہ یہ فیصلہ مختلف متعلقہ شعبوں کی بھرپور کوششوں کا نتیجہ ہے۔ حکومتی اقدامات میں احتیاطی تدابیر کے ذریعے کرونا مرض کا مقابلہ کرنے میں کامیابی ثابت کی ہے۔

تاہم وزارت داخلہ نے مسجد حرام اور مسجد نبوی میں آنے والے زائرین کے لیے ماسک پہننا لازمی ہے تاکہ تمام زائرین اورعبادت گذاروں کی صحت اور سلامتی کو یقینی بنایا جا سکے۔

سعودی عرب کے وزیر برائے مذہبی امور عبداللطیف بن عبدالعزیز آل الشیخ نے کہا ہے کہ کرونا وبا کی وجہ سے ہونے والی دوری اور احتیاطی تدابیر کے بعد مملکت کی مساجد اور مساجد میں عبادت کی واپسی کے فیصلے کے احساسات ناقابل بیان ہیں۔ یہ سن کر بہت خوشی ہو رہی ہے کہ مملکت میں تمام مساجد میں عبادت کا عمل معمول کے مطابق شروع ہوگیا ہے۔

انہوں نے مملکت میں کرونا وبا کے خلاف موثر احتیاطی تدابیراختیار کرنے پر خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی مساعی کا شکریہ ادا کیا اور ان کی گڈ گورننس کی تعریف کی۔

خیال رہے کہ گذشتہ شب وزارت داخلہ نے خوش خبری دی تھی کہ ملک بھر کی مساجد میں عبادات کے لیے اختیارکردہ ایس اوپیز میں مزید نرمی کی گئی ہے۔ نئے اقدامات میں مساجد میں نمازیوں کے درمیان سماجی فاصلے کی شرط ختم کردی گئی ہے۔

اور ایک دوسری ٹویٹ میں، انہوں نے کہا: "مساجد اور مساجد میں سماجی دوری کے اقدامات کے اطلاق کو روکنے کی خوشخبری کے ساتھ، ہم خدا سے دعا کرتے ہیں کہ وہ حرمین شریفین کے متولی اور ولی عہد شہزادہ کو ان کوششوں کا بدلہ دے۔ خدا کے گھر جانے والوں کی صحت کو محفوظ رکھیں، اور میں اپنے ساتھی مساجد کے ملازمین اور نمازیوں کا بھی شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے کامیابی کے بعد اپنا حصہ ڈالا، اللہ اس وبا پر قابو پائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں