جوبائیڈن نےامریکا میں روس سے تیل کی تمام درآمدات پر پابندی عاید کردی

روسی تیل اب امریکی بندرگاہوں پرقابل قبول نہیں رہے گا،امریکی عوام صدرپوتین کوایک اورزبردست دھچکا پہنچائیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی صدر جو بائیڈن نے روس سے تیل کی تمام درآمدات پر پابندی عایدکردی ہے۔انھوں نے امریکیوں کو خبردارکیا ہےکہ اس اقدام کے نتیجے میں انھیں نقصان اٹھانا پڑے گا۔

انھوں نے منگل کے روز اپنے اعلان میں کہا ہے کہ ’’امریکا روس کی معیشت کی اہم شریان کو نشانہ بنارہا ہے اورہم روسی تیل،گیس اور توانائی کی تمام درآمدات پر پابندی عاید کر رہے ہیں‘‘۔

جوبائیڈن نے وائٹ ہاؤس سے اپنے خطاب میں کہا کہ ’’اس کا مطلب یہ ہے،روسی تیل اب امریکی بندرگاہوں پر قابل قبول نہیں رہے گا اور امریکی عوام روسی صدر ولادی میرپوتین کوایک اور زبردست دھچکا پہنچائیں گے‘‘۔

انھوں نے بتایا کہ ’’یہ اقدام اتحادیوں کے ساتھ ’’قریبی مشاورت‘‘سے کیا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ’’امریکا تمام یورپ کے مقابلے میں اندرون ملک کہیں زیادہ تیل پیدا کرتا ہے۔ہم توانائی کے خالص برآمد کنندگان ہیں، لہٰذا ہم یہ قدم اس وقت اٹھاسکتے ہیں جب دوسرے ایسا نہیں کرسکتے ہیں‘‘۔

امریکی صدر کےاس اعلان سے چندے قبل برطانیہ نے کہا ہے کہ وہ سال کے آخرتک روس سے تیل اور تیل کی مصنوعات کی درآمدات کومرحلہ وار ختم کر دے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں