خنزیر کے دل کی پیوندکاری کروانے والا شخص دو ماہ میں چل بسا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ڈیویڈ بینیٹ خنزیر کے دل سے ٹرانسپلانٹ کرانے کے بعد پچھلے کئی دنوں سے طبی مسائل کا شکار تھے تاہم آج بروز بدھ اُن کا انتقال ہو گیا ہے۔

یونیورسٹی آف میری لینڈ میڈیکل سینٹر (UMMC) نے بتایا کہ عارضۂ قلب میں مبتلا 57 سالہ ڈیویڈ جنہوں نے جینیاتی طور پر تبدیل شدہ خنزیر کے دل کا ٹرانسپلانٹ کروایا تھا منگل کی سہ پہر انتقال کر گئے ہیں۔

اسپتال نے اپنے بیان میں کہا کہ مریض کی حالت کئی دن پہلے سے بگڑنا شروع ہو گئی تھی، ڈیویڈ کو، یہ واضح کرنے کے بعد بھی کہ وہ صحت یاب نہیں ہوں گے، “خصوصی دیکھ بھال” کی سہولت فراہم کی گئی۔ ہسپتال نے کہا کہ ڈیویڈ اپنے آخری وقت میں اہلخانہ کے ساتھ بات چیت کرنے میں کامیاب رہے۔

ڈیویڈ پہلی بار اکتوبر میں ایک مریض کے طور پر UMMC میں آئے تھے اور انہیں زندہ رکھنے کے لیے دل اور پھیپھڑوں کی بائی پاس مشین پر رکھا گیا تھا۔ غیر معمولی دھڑکن کی رفتار کے باعث انہیں ہارٹ ٹرانسپلانٹ کے لیے غیر صحت مند قرار دیا گیا تھا۔

اسپتال نے بتایا کہ ٹرانسپلانٹ کی شرائط پر پورا نہ اترنے کے باوجود مریض نے آپریشن کی حامی بھری اور امریکی فوڈ اینڈ ڈرگز ایڈمنسٹریشن (FDA) نے خنزیر کے دل کی پیونکاری کی اجازت دے دی۔

یہ ٹرانسپلانٹ پچھلے تمام ٹرانسپلانٹ سے اپنی خصوصیات کے اعتبار سے منفرد تھا کیونکہ اس میں انسانی جسم کی طرف سے عضو کو مسترد کیے جانے سے بچنے کے لیے خنزیر کے دل کو جینیاتی طور پر تبدیل کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں