نورڈ اسٹریم 2 گیس لائن منصوبہ اپنی موت آپ مر چکا ہے: واشنگٹن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی نائب وزیر خارجہ وکٹوریا نولینڈ نے باور کرایا ہے کہ روس کو جرمنی سے جوڑنے والا "نورڈ اسٹریم 2" گیس پائپ لائن منصوبہ "دم توڑ چکا" ہے اور اس کے "زندہ" ہونے کا کوئی امکان نہیں۔

وکٹوریا نے منگل کے روز پارلیمنٹ کے اجلاس کے دوران میں کہا کہ "یہ منصوبہ دھات کا ایک بڑا منصوبہ بن کر سمندر کی گہرائی میں جا چکا ہے اور میں نہیں سمجھتی کہ اس کا بحال ہونا ممکن ہے"۔

نورڈ اسٹریم 2 پائپ لائن منصوبہ Baltic Ocean کے راستے روس کی سب سے بڑی گیس فیلڈ کے ذریعے قدرتی گیس جرمنی اور دیگر یورپی ممالک تک پہنچانے کا منصوبہ ہے۔ منصوبے میں پائپ لائن کی لمبائی تقریبا 1230 کلو میٹر ہے۔

مذکورہ نئی پائپ لائن کی تعمیری لاگت تقریبا 11 ارب ڈالر ہے۔ یہ پائپ لائن نورڈ اسٹریم 1 منصوبے کے برابر قدرتی گیس فراہم کرے گی۔ یہ مقدار 2.6 کروڑ خاندانوں کو گیس فراہم کرنے کے لیے کافی ہے۔

ماہرین کے مطابق دو وجوہات کے پیش نظر یہ منصوبہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ یہ منصوبہ یورپی یونین کی مستقبل میں گیس کی طلب کا ایک تہائی حصہ پورا کرے گا۔ دوسرا یہ کہ اس طرح موجودہ قیمت کے مقابلے میں 25% کم خرچ پر گیس حاصل ہو گی۔

روس کی جانب سے یوکرین کے مشرق میں واقع دو علاحدگی پسند علاقوں کی خود مختاری تسلیم کرنے کے جواب میں جرمن چانسلر اولاف شولٹس نے "نورڈ اسٹریم 2" منصوبے کی منظوری کو معلق کر دینے کا اعلان کیا تھا۔ ادھر ماسکو نے اس پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے امید ظاہر کی تھی کہ جرمنی کا فیصلہ "عارضی" ہو گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں