بیٹ مین کا ریاض کی سڑکوں پر مٹر گشت.. کیا کہانی ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں سوشل میڈیا پر بیٹ مین کے لباس میں ملبوس ایک نوجوان کو دارالحکومت ریاض کے ایک سٹور سے کافی خریدتے ہوئے دکھایا گیا بیٹ مین ایک افسانوی سپر ہیرو کردار ہے جو کامکس میں پایا جاتا ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیوز میں نظر آنے والے سپر ہیرو [بیٹ مین] کے کردار کو غیر معمولی طور پر سراہا گیا ہے۔

دیگر کلپس جس میں کئی لوگوں کو سپر ہیرو سے ملاقات کی ویڈیوز جاری کی ہیں۔ یہ ویڈیو ریاض بلیو وارڈ کے گیٹ پر بنائی گئی ہیں جن پر سوشل میڈیا پر غیر معمولی رد عمل سامنے آیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے بیٹ مین کا روپ دھارنے والے سعود الھزانی سے ملاقات کی جس نے کہانی کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ مُجھ سے فلم بندی کے منصوبے کے لیے رابطہ کیا گیا تھا اور کام فوری تھا۔ مجھے بیٹ مین کا لباس پہننا پڑا اور سڑک پر میں نے کافی خریدی۔ پھر بولیورڈ پہنچنے کے لیے پیدل چلا اور جہاں گیٹ پر ایک گاڑی آکر رکی، اس نے کہا کہ مالکان کو مزاح کا اچھا احساس ہے اور اسے لینے کی پیشکش کی۔

الھزانی کے گھر واپس آنے کے بعد جہاں اس نے 10 گھنٹے فلم بندی میں گزارے کہا کہ میں بیدار ہوا تو میری ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوچکی تھی۔x

کردار سازی

اس شعبے میں سعودی نوجوان کا شوق 11 سال پر محیط ہے۔ اس نے اپنی تقریر میں وضاحت کی کہ Cosplay کی اصطلاح دو الفاظ کا مرکب لفظ ہے جس میں کاسٹیوم پلے شامل ہے۔ اس کے معنی فلموں، گیمز سے متاثر کرداروں کو بنانے اور ان کی نقالی کرنے کا فن ہے جس میں anime یا کوئی معروف کردار جو زیادہ تر خیالی ہو۔

اس نے اس عرصے کے دوران 100 کردار ادا کیے۔ انہوں نے 2017 میں اس فن سے اپنی محبت کی وجہ سے اپنی ملازمت سے استعفیٰ دے دیا تھا جسے انہوں نے اینیمی اور جاپانی ثقافت کی پیروی کی وجہ سے پہچانا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں