تونس: غیر ملکی فنڈنگ کیس میں راشد الغنوشی اور داماد کی عدالت میں پیشی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

تونس میں عدالت نے سیاسی جماعت النہضہ موومنٹ کو عدالتی کارروائی کے لیے پیش کرنے کا اعلان کیا ہے۔ یہ پیش رفت انتخابی مہم کے لیے غیر ملکی فنڈنگ کا حصول ثابت ہونے کے بعد سامنے آئی ہے۔ ملکی قانون میں یہ ایک جرم ہے جس پر سزا مقرر ہے۔

عدالت کے رابطہ دفتر کی جانب سے جمعے کے روز جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ النہضہ موومنٹ کے قانونی ترجمان کے طور پر جماعت کے سربراہ راشد الغنوشی اور جماعت کے ایک رہ نما رفیق عبدالسلام کو عدالتی کارروائی کا سامنا ہو گا۔ رفیق عبدالسلام تشہیری معاہدے میں ملوث پائے گئے ہیں۔ وہ راشد الغنوشی کے داماد بھی ہیں۔

الغنوشی پر اپنی جماعت کی انتخابی مہم کے لیے غیر ملکی فنڈنگ حاصل کرنے اور نا معلوم ذرائع سے براہ راست فنڈنگ قبول کرنے کے الزامات ہیں۔ ان کے داماد پر الغنوشی کے ساتھ شریک ہونے کا الزام ہے۔

انتخابی مہم کے لیے مذکورہ غیر ملکی فنڈنگ حاصل کرنے کے حوالے سے النہضہ موومنٹ کے ساتھ عدالتی تحقیقات کا آغاز کئی ماہ قبل ہوا تھا۔ تحقیقات کا آغاز اس انکشاف کے بعد ہوا تھا کہ النہضہ موومنٹ نے ملک میں اپنی تصویر بہتر بنانے اور رائے عامہ کے ساتھ ہیرا پھیری کے لیے غیر ملکی جانبوں سے فنڈنگ حاصل کی۔

تونس کے قانون میں سیاسی جماعتوں پر اس بات کی پابندی ہے کہ وہ کسی بھی غیر ملکی جانب سے براہ راست یا بالواسطہ فنڈنگ قبول کریں۔ اسی طرح غیر ملکی فنڈنگ کی تلاش بھی جرم شمار ہوتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں