روس اور یوکرین

چیچن سربراہ رمضان قدیروف نے اپنی وڈیو کی تصدیق کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

چیچنیا کے سربراہ رمضان قدیروف نے تصدیق کر دی ہے کہ وہ روسی افواج کے شانہ بشانہ یوکرین میں موجود ہیں۔

قدیروف نے آج پیر کے روز ٹیلی گرام پر ایک وڈیو کلپ جاری کیا۔ وڈیو میں وہ فوجی وردی میں ایک میز پر بیٹھے نظر آ رہے ہیں۔ ان کے ساتھ کمرے میں فوجی اہل کار بھی موجود ہیں۔

قدیروف کے مطابق یہ وڈیو یوکرین کے دارالحکومت کیف کے نزدیک گوسٹومیل ہوائی اڈے پر بنائی گئی۔ روسی افواج نے اپنے حملے کے ابتدائی دنوں میں ہی اس ہوائی اڈے پر قبضہ کر لیا تھا۔

قدیروف نے لکھا کہ "چند روز قبل ہم کیف سے 20 کلو میٹر کی دوری پر تھے اور اب ہم زیادہ قریب ہو چکے ہیں"۔ چیچنیا کے سربراہ نے یوکرین کی فوج سے ہتھیار ڈالنے کا مطالبہ کیا بصورت دیگر "ان کی کہانی ختم ہو جائے گی"۔

واضح رہے کہ ماسکو کے شدید ہمنوا رمضان قدیروف آہنی ہاتھ کے ساتھ چیچنیا پر حکومت کر رہے ہیں۔ انہوں نے بہت پہلے اعلان کر دیا تھا کہ وہ روسی افواج کے شانہ بشانہ لڑنے کے لیے چیچن فوج کو یوکرین بھیجنے کے لیے تیار ہیں۔ قدیروف کے مطابق روسی صدر ولادی میر پوتین کا 24 فروری کو یوکرین میں فوجی آپریشن کے آغاز کا فیصلہ درست تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں