روس اور یوکرین

روس : جنگ مخالف موقف سرکاری ٹی وی کی براہ راست نشریات میں درانداز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس میں پیر کے روز سرکاری ٹیلی وژن کے چینل وَن کی شام کی نشریات میں اُس وقت دل چسپ صورت حال پیدا ہو گئی جب ایک خاتون ملازم بلیٹن کے بیچ ہاتھ میں پلے کارڈ لے کر خاتون میزبان کے بالکل پیچھے آ کر کھڑی ہو گئی۔ پلے کارڈ پر لکھی عبارت میں یوکرین میں جنگ کی مذمت کی گئی تھی۔

مذکورہ پلے کارڈ پر انگریزی زبان میں ہاتھ سے "No War" لکھا ہوا تھا۔ اس کے علاوہ روسی زبان میں "جنگ روک دیں .. پروپیگنڈے کا یقین مت کریں .. یہ لوگ یہاں آپ سے جھوٹ بول رہے ہیں" کی عبارتیں تحریر تھیں۔ پلے کارڈ میں نیچے انگریزی زبان میں اس عبارت کے ساتھ دستخط کیے گئے تھے کہ "روسی شہری جنگ کے خلاف ہیں"۔

پلے کارڈ لے کر آنے والی اوفسیانیکوفا نے اس موقع پر روسی زبان میں بعض عبارتوں کو بلند آواز میں دہرایا۔ اس دوران میں خبریں پڑھنے والی خاتون میزبان نے اپنی آواز اونچی کر کے اوفسیانیکوفا کی حرکت کو ڈھانپنے کی کوشش کی۔ عبد ازاں چینل نے دیگر مناظر دکھانا شروع کر دیے۔

روسی چینل کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ اسٹوڈیو میں داخل ہونے والی خاتون کے خلاف واقعے کی اندرونی سطح پر تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ روسی خبر رساں ایجنسی ٹاس نے پولیس ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ مذکورہ خاتون کو گرفتار کر لیا گیا۔ خاتون کو روسی مسلح افواج کی ساکھ کو نقصان پہنچانے کے الزام میں سزا کا سامنا ہو سکتا ہے۔

ایک ویب سائٹ پر جاری وڈیو کلپ میں اوفسیانیکوفا نے بتایا کہ اس کے والد یوکرینی اور والدہ روسی ہیں۔ وہ دنوں ملکوں کو دشمن شمار نہیں کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں