جی سی سی الریاض میں یمن کے متحارب فریقوں کے درمیان مذاکرات کی میزبانی کرے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) 29 مارچ سے7 اپریل تک سعودی دارالحکومت الریاض میں یمن کے متحارب فریقوں کے درمیان مذاکرات کی میزبانی کرے گی۔

جی سی سی کے سیکرٹری جنرل نایف الحجرف نے جمعرات کو الریاض میں ایک پریس کانفرنس میں بتایا ہے کہ اس مشاورت میں فوجی اور سیاسی امورسمیت چھے موضوعات کا احاطہ کیا جائے گا۔ان مذاکرات کا انعقاد کوئی ’’نیااقدام‘‘ نہیں بلکہ ’’اس بات کی تصدیق ہے کہ تنازع کا حل یمنیوں کے ہاتھ میں ہے‘‘۔

انھوں نے یمن کے تمام متحارب فریقوں ان مذاکرات میں شرکت کی دعوت دی ہے اور اس کے علاوہ ان سے کہا ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی سرپرستی میں ہونے والے امن مذاکرات میں شامل ہوں۔اس مذاکراتی عمل کو بھی خلیجی عرب ممالک کی حمایت حاصل ہے۔

انھوں نے تمام یمنی فریقوں پر زوردیا کہ وہ جنگ بندی کریں اور امن مذاکرات کا نئے سرے سے آغازکریں۔ان کا کہنا تھا کہ الریاض میں ہونے والے مذاکرات میں شرکت کی دعوت ’’بغیرکسی استثنا‘‘کے ہرایک کو بھیجی جائے گی اور جو بھی فریق شرکت پرآمادہ ہوں گے،ان کے درمیان مذاکرات منعقد کیے جائیں گے۔

نایف الحجرف نے امید ظاہرکی کہ تمام یمنی جماعتیں جی سی سی کے اس اقدام پر مثبت ردعمل ظاہرکریں گی۔خلیج تعاون کونسل یمنی بحران کے حل کے لیے مشاورت کو ملک میں قیام امن تک پہنچنے کے مقصد سے اسپانسرکرے گی۔

انھوں نے ’’اندرونی محاذ کومتحد کرنے‘‘، الریاض معاہدے پر عمل درآمد اور امن کے حصول کے لیے اقوام متحدہ کے حمایت یافتہ سیاسی مذاکرات کے عمل کع دوبارہ شروع کرنے کے لیے یمنیوں کے درمیان مشاورت کا طریق کارطے کرنے پر بھی زور دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں