روس اور یوکرین

روسگرام اور انکل وانیاز ... انسٹاگرام اور میک ڈونلڈ کا روسی متبادل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یوکرین میں فوجی آپریشن کے سبب ماسکو پر مغربی ممالک کی پابندیوں کے نتیجے میں بعض عالمی کمپنیاں روس سے رخصت ہو گئی ہیں۔ ایسے میں ماسکو بظاہر متبادل راستے تلاش کرنے میں مصروف ہے۔

روسی پارلیمنٹ کی جانب سے فاسٹ فوڈ ریسٹورنٹس کی مقامی چین کو سپورٹ کرنے کا اعلان کیا ہے تا کہ وہ عالمی شہرت یافتہ چین "میک ڈونلڈز" کی جگہ لے سکے۔ آخر الذکر چین نے کچھ عرصہ قبل روس میں اپنے مراکز بند کرنے اور ملک سے رخصت ہو جانے کا اعلان کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق نئی فاسٹ فوڈ چین کا نام Uncle Vanya's ہے۔ روس کا یہ نیا برانڈ ایک سال کے اندر کام شروع کر دے گا۔ یہ پیش رفت روسی پارلیمنٹ کے اسپیکر کی جانب سے پیش کی گئی تجویز کے تحت عمل میں آئے گی۔

برطانوی اخبار "دی انڈیپینڈنٹ" کے مطابق مذکورہ نئی فاسٹ فوڈ چین کا لوگو بھی امریکی مکڈونلڈز کے لوگو سے ملتا جلتا ہو گا۔ بات صرف یہاں تک محدود نہیں ہے بلکہ یہ معلومات بھی ہیں کہ ماسکو مشہور سوشل میڈیا ویب سائٹ "انسٹاگرام" کی متبادل ایپلی کیشن کی منصوبہ بندی بھی کر رہا ہے۔ اس نئی ایپ کا نام "روسگرام" ہو گا اور اس کا ہدف ملک میں موجود انسٹاگرام کے 8 کروڑ صارفین ہوں گے۔ روسگرام کی نئی ایپلی کیشن رواں سال اپریل میں قابل رسائی ہو گی۔

واضح رہے کہ گذشتہ دنوں کے دوران میں متعدد عالمی برانڈز روس سے رخصت ہو چکے ہیں۔ ان میں زارا ، ایچ اینڈ ایم، مینگو، ایڈیڈاس، مکڈونلڈز اور اسٹار بکس وغیرہ شامل ہیں۔ علاوہ ازیں متعدد عالمی کمپنیوں نے روس میں اپنا کام روک دینے کا اعلان کیا ہے۔

روس دو ہفتوں سے بھی کم عرصے ایران اور شمالی کوریا کو پیچھے چھوڑتے ہوئے دنیا میں سب سے زیادہ پابندیوں اور سرزنش کا شکار ملک بن گیا ہے۔

ماسکو پر عائد پابندیوں کی مجموعی تعداد 5530 سے زیادہ ہے۔ بلومبرگ نیوز ایجنسی کے مطابق تہران 3616 پابندیوں کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔

دنیا کے مختلف ممالک کی جانب سے روزانہ کی بنیاد پر روس پر نئی پابندیاں عائد کیے جانے کا سلسلہ جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں