بائیڈن تھکن ،چڑ چڑے پن اور نسیان کا شکار ہیں: کریملن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

روس کے صدر ولادی میر پوتین کے خلاف امریکی "الزامات" پر جمعہ کو کریملن اور وائٹ ہاؤس کے درمیان ایک بار پھر سخت بیانات کا تبادلہ ہوا ہے۔

کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف نے امریکی صدر جو بائیڈن کی جانب سے پوتین کو ’خونخوار ٹھگ‘ قرار دینے پرکرارا جواب دیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ بائیڈن کی جارحانہ سوچ ان کی تھکن، نسیان اور کم زوری کی وجہ سے ہے۔ لہٰذا ہم اس کا سنجیدگی سے جائزہ نہیں لیں گے۔

انھوں نے مزید کہا کہ مسٹر بائیڈن کا معمول کا چڑچڑاپن، تھکاوٹ، اور بعض اوقات بھول جانا تھکاوٹ کے سبب ہےجو مخالفانہ بیانات کا باعث بنتا ہے۔ ہم کوئی سخت جواب نہیں دیتے تاکہ مزید دشمنی نہ ہو۔

'ذاتی توہین'

انھوں نے کہا کہ یہ بیانات پہلے ہی ذاتی توہین میں تبدیل ہو چکے ہیں۔

یہ بات بائیڈن کے نئے بیانات کے جواب میں سامنے آئی ہے۔ جمعرات کی شام، کیپٹول ہل پر سالانہ "فرینڈز آف آئرلینڈ" کے لنچ کے موقع پر خطاب میں جوبائیڈن نے ولادی میر پوتین کو "ایک قاتل آمراور ایک خونخوار ٹھگ قرار دیا تھا جو یوکرین کے لوگوں کے خلاف غیر اخلاقی جنگ جاری رکھے ہوئے ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں