امریکا کی سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات اور شہری ڈھانچے پرحوثیوں کے حملوں کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکا نے سعودی عرب پر یمن سے ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے تازہ ڈرون اور میزائل حملوں کی مذمت کی ہے اور مملکت کے حقِ دفاع کی حمایت کااعادہ کیا ہے۔

امریکی صدر کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے اتوار کے روزایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ہم سعودی عرب میں بنیادی شہری ڈھانچے کے خلاف گذشتہ 48 گھنٹوں کے دوران میں حوثیوں کے حملوں کی مذمت کرتے ہیں‘‘۔ان حملوں میں مبیّنہ طورپرپانی کو مصفا کرنے کی تنصیبات کے علاوہ تیل اور قدرتی گیس کے بنیادی ڈھانچے کونشانہ بنایا گیا ہے۔

حوثی جنگجو یہ دہشت گرد حملے ایران کی مدد سے کرتے ہیں جو انھیں میزائل اوربغیرپائیلٹ ڈرونز کے اجزاء، تربیت اور مہارت مہیا کرتا ہے۔جیک سلیوان نے اپنے بیان میں کہا کہ ایران کی یہ سرگرمی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی ان قراردادوں کی خلاف ورزی ہے جن میں یمن میں ہتھیاروں کی درآمد پرپابندی عاید کی گئی ہے۔

انھوں نے مزید کہا:’’سعودی عرب اور یمنی حکومت نے گذشتہ سال کے دوران میں جنگ بندی اورکشیدگی میں کمی کے لیے اقوام متحدہ کے متعدد مطالبات کی توثیق کی ہے مگرحوثیوں نے ان مطالبات کو مسترد کردیا ہے اور اس کے بجائے یمن میں نئی جارحیت اور دہشت گردانہ کارروائیوں کے ذریعے ان امن کوششوں کا جواب دیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس کا ایک ثبوت گذشتہ رات سعودی عرب کے خلاف شروع کی گئی کارروائیاں ہیں۔اب وقت آگیا ہے کہ اس جنگ کو اختتام تک پہنچائیں لیکن ایسا صرف اسی صورت میں ہوسکتا ہے جب حوثی اقوام متحدہ اور اس کے ایلچی کے ساتھ تعاون پررضامند ہوں کیونکہ وہ اس تنازع کو ختم کرنے کے لیے مرحلہ وارکام کررہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ امریکا یمن میں امن کوششوں کی مکمل پشت پناہی کررہا ہےاور ہم حوثی ملیشیا کے حملوں سے علاقے کے دفاع کے لیے اپنے شراکت داروں کی مکمل حمایت جاری رکھیں گے۔ہم عالمی برادری سے بھی ایسے ہی اقدام کا مطالبہ کرتے ہیں۔

اس سے قبل اتوار کے روز عرب اتحاد نے اعلان کیا تھا کہ سعودی عرب کی فضائی دفاعی افواج نے حوثی ملیشیا کے مملکت کے شہروں جازان، خمیس مشیط، طائف،اورالجنوب کی طرف داغے گئے نو ڈرونز کو روک کر تباہ کر دیا ہے۔

ان حملوں کے بعد اتحاد نے مزید یہ اطلاع دی کہ حوثیوں نے جدہ میں آرامکو کی پیٹرولیم مصنوعات کے تقسیمی پلانٹ پر حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں ایک ٹینک میں’’محدود آگ‘‘لگ گئی اوراس پرجلد ہی قابو پالیا گیا ہے۔واقعے میں کوئی جانی نقصان ہواتھا اورنہ کوئی شخص زخمی ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں