روس اور یوکرین

روس کے خلاف گم نام ہیکرگروپ کے سائبرحملے،ویب سائٹس ، ٹی وی نشریات عارضی معطل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

گم نام بین الاقوامی ہیکروں پر مشتمل گروپ نے یوکرین پر حملے کے انتقام میں روسی صدرولادیمیر پوتین کے خلاف’’سائبر جنگ‘‘کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ وہ سائبرحملوں کا سلسلہ شروع کررہا ہے۔

یوکرین پرروسی فوج کے حملے کے آغاز کے ایک دن بعد 25 فروری کو ایک ٹویٹ میں ’’ہیکٹیوسٹ اجتماعی‘‘ نے اعلان کیا تھا کہ ’’گم نام گروپ اجتماعی طور پر روسی حکومت کے خلاف سائبرجنگ میں شریک ہے‘‘۔

روسی ٹی وی نیٹ ورکس پر ہیکروں کے حملے کے بعد عالمی سطح پر اس معاملے میں دلچسپی کا اظہار کیا گیا ہے۔ہیکروں نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر ہیک کا ایک مختصرویڈیو کلپ شیئر کیا ہے۔اس کے بعد لاکھوں ناظرین نے اس کو ملاحظہ کیا ہے۔

ویڈیومیں دکھایا گیا ہے کہ روسی ٹی وی پر معمول کے پروگراموں میں خلل ڈالا جا رہا ہے۔اس میں ہیکر یوکرین میں بموں کی تصاویر کے ساتھ فوجی تنازع کے بارے میں بات کر رہے ہیں۔

ہیکروں نے 7 مارچ کو ویڈیو کے ساتھ ٹویٹ کیا کہ ’’ہیکنگ اجتماعی #Anonymous نے روس کی اسٹریمنگ سروسز ونک اینڈ ایوی (نیٹ فلیکس کی طرح) اور لائیو ٹی وی چینلز روس 24، کینال ون، ماسکو 24 کو یوکرین سے جنگی فوٹیج نشرکرنے کے لیے ہیک کیا ہے۔

بی بی سی نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ اس اسٹنٹ میں ایک گمنام ہیک کے تمام مخصوص عناصر شامل تھے: متاثرکن، ڈرامائی اورآن لائن شیئر کرنا آسان تھا۔ گم نام گروپ’’اجتماعی‘‘ کے دیگر سائبرحملوں کی طرح اس بات کی تصدیق کرنا مشکل تھا کہ اس کے پیچھے کون ہے؟

اجتماعی ہیکروں کے چھوٹے گروپوں میں سے ایک نے ہیک کی ذمہ داری قبول کی تھی ۔ اس نے پورے 12 منٹ کے لیے روسی ٹی وی کی سروسزپرقبضہ کرلیا تھا۔گروپ نے دھمکی دی کہ اگریوکرین میں امن کی بحالی کے لیے کچھ نہ کیا گیا تو ہم کریملن پر حملوں کو مزید تیزکردیں گے اوراپنےاقدامات کا یہ جوازپیش کریں گے کہ روس کی جانب سے بے گناہ یوکرینیوں کا قتل عام کیا جا رہا ہے۔

گمنام نے بعض روسی ویب سائٹس کو عارضی طور پربند کردیا ہےاور چوری شدہ سرکاری ڈیٹا بھی حاصل کرلیا ہے ۔اس میں یکم مارچ کو روس کی وزارت اقتصادی ترقی کا ڈیٹا بیس بھی شامل ہے اور اس کو افشا بھی کیا گیا ہے۔

گم نام کے اب تک حملے ’’کافی بنیادی‘‘نوعیت کے رہے ہیں، لیکن ٹی وی کوہیک کرنا ناقابل یقین حد تک تخلیقی اور کافی مشکل کام تھا۔ہیکرززیادہ تر ڈی ڈی او ایس نوعیت کے حملے کر رہے ہیں۔ان میں درخواستوں کے سیلاب کے ساتھ ایک سروس شامل ہے، یہ ویب سائٹس کوحملہ کرکے عارضی طور پر بند کرنے کانسبتاً آسان طریقہ ہے۔

گمنام گروپ پہلی بار2003ء میں ویب سائٹ 4چن سے نمودار ہواتھا۔ کوئی قیادت نہ ہونے کی وجہ سے اس گروپ کی ٹیگ لائن ’ہم ہجومہیں‘ہے اور یہ وسیع پیمانے پر ان حکومتوں، کارپوریشنوں اور تنظیموں کو نشانہ بنانے کے لیے معروف ہے جن پر ڈی ڈی او ایس حملوں میں سنسر شپ کا الزام ہے۔یہ گروپ کئی سوشل میڈیا اکاؤنٹس چلاتا ہے، صرف ٹویٹرپر اس کے متعدد صفحات ہیں اوران پر ایک کروڑ 55 لاکھ پیروکار(فالورز) ہیں۔

اجتماعی ہیکرز نے روسی ویب سائٹس پرکنٹرول حاصل کرکے اور دکھائے گئے مواد کو تبدیل کرکے ان کا حلیہ بگاڑ دیا ہے۔اب تک ان حملوں کی وجہ سے ویب گاہوں کے آن لائن مواد کی نمائش میں خلل پڑا ہے لیکن سائبرسکیورٹی ماہرین سائبر حملوں میں ممکنہ اضافے کے بارے میں مشوش ہیں۔

سائبرپالیسی جرنل سے تعلق رکھنے والی ایملی ٹیلر نے گمنام کے سائبرحملوں کے حوالے سے بتایا کہ ’’میں نے ایسا کبھی نہیں دیکھا۔ان حملوں میں خطرات ضرورہیں۔ان میں اضافہ ہوسکتا ہے یا کچھ حادثاتی طور پر شہری زندگی کے ایک اہم حصے کو حقیقی نقصان پہنچاسکتے ہیں‘‘۔

روس میں محافظ گروپ بھی یوکرین پراپنے سائبرحملے شروع کر رہے ہیں لیکن نسبتاً چھوٹے پیمانے پر۔جنوری 2022 سے اب تک یوکرین کے خلاف مربوط ڈی ڈی او ایس حملوں کے تین بڑے سلسلے اور مزید سنگین ’’وائپر‘‘ حملوں کے تین دیگرواقعات سامنے آئے ہیں۔ان میں یوکرین کے کمپیوٹرسسٹمز کی ایک چھوٹی سی تعداد کا ڈیٹا حذف کردیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں