سعودی خاتون فضائی میزبان کی عملی تجربے اور چیلنجوں کے حوالے سے گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی نوجوان خاتون لِندا حریری نے انٹرنیٹ کے ذریعے فضائی میزبان کی ملازمت حاصل کر کے ایک نئے تجربے کا آغاز کیا۔ ماضی قریب تک یہ میدان غیر سعودی خواتین کی حد تک محدود تھا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے لندا نے بتایا کہ انہوں نے انگریزی زبان کا امتحان، انٹرویو اور مطلوبہ طبی معائنہ پاس کر لیا۔ اس کے بعد تین ماہ تک فضائی میزبان کی ملازمت سے متعلق تمام امور سیکھے۔ ان میں امن و سلامتی کے علاوہ نظریاتی، عملی اور سائنسی تربیت شامل ہے۔ بعد ازاں حتمی امتحان پاس کر کے بطور فضائی میزبان کام شروع کیا۔

لندا نے کیمیا کے مضمون میں گریجویشن مکمل کی تاہم انہیں اپنے شعبے سے متعلق کوئی ملازمت نہیں مل سکی۔

لندا کا کہنا ہے کہ انیہں گھر والوں اور معاشرے کی جانب سے بھرپور سپورٹ حاصل رہی۔ تمام لوگوں نے فضائی میزبانی کے پیشے میں قدم رکھنے کے حوالے سے ان کی حوصلہ افزائی کی۔

لندا کے مطابق اس شعبے میں کام کرنے کے لیے کئی مطلوبہ شرائط ہیں۔ ان میں خوب صورتی، لیاقت، ذہانت، چستی اور حسنِ تعامل، کام کا دباؤ برداشت کرنا اور طویل گھنٹوں تک کھڑے یا چلتے رہنا شامل ہے۔

سعودی نوجوان خاتون نے مزید کہا کہ وہ اس کام کے تھکا دینے والے امور کو "رکاوٹ" نہیں بلکہ "چیلنج" سمجھتی ہیں۔

لندا کے مطابق سعودی نوجوان خواتین کی ایک بڑی تعداد اس پیشے میں دل چسپی رکھتی ہے۔ لندا نے بتایا کہ وہ ہوابازی کی تعلیم حاصل کر رہی ہیں تا کہ طیارے کی کپتان بن سکیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں