سعودی عرب یوکرین بحران کے پُرامن حل کا حامی ہے:شہزادہ فیصل کی لافروف سے گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزیرخارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے اپنے روسی ہم منصب سے فون پر گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب یوکرین میں بحران کے پرامن حل کی حمایت کرتا ہے۔

انھوں نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی متحارب فریقوں کے درمیان ثالثی مذاکرات کی میزبانی کی پیش کش کا اعادہ کیا ہے۔سعودی ولی عہد نے اسی ماہ روس اور یوکرین کے درمیان جنگ بندی کے لیے مذاکرات کی میزبانی کی پیش کش کی تھی۔

سرگئی لافروف سے شہزادہ فیصل نے سعودی عرب اور روس کے درمیان دو طرفہ تعلقات پر بھی تبادلہ خیال کیا ہے۔

دونوں ورزاء خارجہ کے درمیان فون پر یہ گفتگو گذشتہ ہفتہ کے روز الریاض میں یوکرین کے صدرکے خصوصی ایلچی رستم عمروف سے شہزادہ فیصل کی ملاقات کے بعدہوئی ہے۔اس ملاقات میں سعودی وزیرخارجہ نے تنازع کے خاتمے کے لیے مملکت کی حمایت کا اعادہ کیا تھا۔

روس نے 24 فروری کو اپنے پڑوسی یوکرین پر حملہ کیا تھا۔اس سے ملک میں انسانی بحران پیدا ہوچکا ہے اور عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے۔

سعودی عرب کا کہنا ہے کہ وہ تیل کی مستحکم قیمتوں کو برقراررکھنے کاخواہاں ہے۔تاہم اس نے پیر کے روزواضح کیا ہے کہ اگر یمن سے ایران کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کے سعودی آرامکو کی تنصیبات پر حملے جاری رہتے ہیں تو وہ تیل کی عالمی مارکیٹ میں رسد کو برقرار رکھنے کا ذمے دارنہیں ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں